ایٹمی حملہ ہونے کی صورت میں زندگی بچانے کے لیے کیا کرنا چاہیے، انتہائی اہم تدابیر خود بھی پڑھیں اور اپنے پیاروں کو بھی شیئر کریں

atom-bom

آج کے دور میں انسان کو جس سب سے خوفناک غیر فطری آفت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے. وه ہے ایک ایٹمی حملہ- اگر آپ کے شہر پر ایٹم بم گرا دیا جائے. تو بهی آپ زنده بچ سکتے ہیں. کیسے؟جانیئے اس تحریر میں،

ایٹمی حملے کا خطره کہاں ہے؟

دنیا میں اس وقت 15،000 کے قریب ایٹمی ہتهیار موجود ہیں.
جن ممالک میں ایٹمی حملے کا خطر سب سے زیاده ہے وه یہ ہیں
جنوبی کوریا،
شمالی کوریا،
پاکستان،
بهارت،
اسرائیل،
ایران،
اس کے علاوه روس و امریکہ بهی ایٹمی جنگ کا نشانہ بن سکتے ہیں.
دارالحکومت، اہم فوجی چهاونیاں، اہم شہر اور زیاده آبادی والے علاقے ایٹمی حملوں کا اولین نشانہ ہیں.

‏"حالات پر نظر رکهیں":

ایٹمی حملہ جنگ میں ہمیشہ آخری آپشن ہوتا ہے. اپنے ملک اور بین الاقوامی معاملات سے خود کو باخبر رکهیں اور کسی جنگ کی صورت میں پیشگی تدابیر تیار رکهیں.

پناه گاه:

آپ ایٹمی حملے اور اس کے اثرات سے صرف اس صورت میں ہی بچ سکتے ہیں اگر آپ کے پاس ایک مظبوط اور محفوظ پناه گاه موجود ہو.
بہترین پناه گاه زمین سے کم از کم 10 فٹ نیچے تہہ خانے کی صورت میں ہوگی. زمین پر بهی پناه گاه بنائی جاسکتی ہے تاہم وه تابکاری کو مکمل طور پر نہیں روک سکے گی، زمین پر بنائی جانے والی پناه گاه عمارتی پتهروں سے بنائی جانی چاہیے اگر عام اینٹیں اور کنکریٹ کا استعمال کرنا ہوتو پهر اینٹوں کی ایک کے بجائے کم از کم 5 پرتیں لگائی جائیں.

سامان:

اپنی پناه گاه میں اتنا سامان ہمہ وقت سٹور رکهیں جو3,2 ہفتوں کے لیے کافی ہو،
سامان کی تفصیل:
‏1- ٹن پیک کهانا جس میں گوشت کا کوئی آئیٹم شامل نا ہو بلکہ سبزیاں ، پهل اور بینز وغیره هوں تاکه فوڈ پوائزننگ کی اضافی مصیبت سے بچا جاسکے.
‏2- ڈسٹلڈ یا منرل واٹر کی بوتلیں.
‏3-پانی کا ایک بڑا ٹینک جو نہانے وغیره کے کام آئے گا.
‏4- ایک ریڈیو.(آپ کا موبائل تابکاری کے پہلے جهٹکے کے بعد ناکاره ہوجائے گا).
‏5-کپڑوں کا ایک اضافی جوڑا.
‏6- کتابیں، جو کئی دن زیر زمین گزارنے میں معاون ثابت ہونگی.
‏7- فرسٹ ایڈ کٹ.
‏8- ادویات جن میں بخار، سردرد، جسم درد کی گولیاں، سلیپنگ پلز
9-بیٹریز یا بجلی کا متبادل انتظام
ٹارچ
پوٹاشیم آئیوڈائیڈ کی گولیاں
‏(دهماکے کے اول دن استمال کریں)
پینسلین پوٹاشیم
سیفیٹک اینٹی-سیپٹک سپرے

اگر ایٹمی حملہ ہوجائے؟

کسی بهی حادثے یا حملے کی صورت میں زنده بچ جانے کا پہلا اصول اپنے ہوش و حواس کو قابو اور دماغ کو حاضر رکهنا ہے.
ایٹمی حملہ ہونے ایک ایک سیکنڈ کے اندر اندر آپ کو ایک زوردار دھماکہ سنائی دے گا اور فورا "مشروم" کی شکل کا ایک کئی میل اونچا دھویں کا طوفان نظر آئے گا. فورا سمجھ جائیے که یہ ایٹمی حملہ ہے.

اب بچنے کی جدوجہد شروع کیجئے:

ایٹمی تباهی کے تین مراحل ہیں،
ابتدائی دهماکہ.
فال آوٹ
تابکار طوفان
اگر تو ایٹمی وار هیڈ آپ کی لوکیشن کے ڈیرڈھ میل کے اندر اندر گرایا گیا ہے تو فورا کلمه پڑھ لیں اور بیٹهے ہیں تو کهڑے ہوجائیں اگلے تین سیکنڈز کے اندر اندر آپ کا وجود بهاپ بن کے اڑ جائے گا. اگر ایٹمی حملے کے لوکیشن سے ڈیرڈھ میل دور ہے تو آپ بچ سکتے هیں.
پهلا دهماکہ سنائی دینے کے بعد آپ کے پاس زیاده سے زیاده 5 سیکنڈزہیں. دهماکے کی مخالف سمت میں کسی بهی ٹهوس چیز ، دیوار یا کسی گہری جگہ پہنچیں ، زمین پر الٹا لیٹ جائیں، اپنے دونوں ہاتھ سر پر رکهتے ہوئے کانوں کو ڈهانپ لیں اور ٹانگیں کراس کرلیں، اسی دوران آپ کو ایک اور زور دار دهماکہ سنائی دے گا جو کے پهلے دهماکے سے سوگنا زیاده طاقتور ہوگا اور شدید زلزله پیدا کرے گا. مبارک ہو! آپ ابتدائی دهماکے سے بچ نکلے.
دهماکہ سنائے دینے کے دو سے تین سیکنڈ اٹھ کهڑے ہوں اور اپنی پناه گاه کیطرف بهاگیں.

فال آوٹ:

پهلے دماکے میں ناصرف سینکڑوں عمارات دهواں بن کے اڑ گئیں جو جن کا ملبہ اب بارش کی صورت میں برسے گا اور ساتھ ہی تابکاری سے بهرے "الفا پارٹیکلز" کی بارش بهی شروع ہوجائے گی. دهماکے کی طرف ہرگز مت مڑکے دیکهیں. اور فال آوٹ میں گرتی چیزوں سے بچنے کی کوشس کریں.
اگر آپ صحیح سلامت پناه گا تک پهنچ گئے تو مبارک ہو! آپ فال آوٹ سے بچ نکلے.
پناه گاه میں داخل هوتے ہی ایک لمحه ضائع کیے بغیر اپنا سارا لباس اتار دیں کیونکہ فال آوٹ کے دوران یہ بڑی مقدار میں الفا پارٹیکلز چوس چکا ہوگا. اس کے بعد اگر آپ زخمی ہیں تو خود ابتدائی طبی امداد لیں اگر صحیح سلامت ہیں تو غسل کرلیں تاکہ فال آوٹ کے بچے کهچے اثرات سے ہرممکن حد تک بچا جاسکے.
اب زمین پر ہر طرف تابکاری کا طوفان ہے اور آپ کو پناه گاه میں کئی دن تک رہنا ہے.‏
یاد رکهیں:‏
‏1-کم سے کم کهائیں.‏
‏2- جتنا ممکن ہوسکے سوکر وقت گزاریں.‏
‏3- ریڈیو سنتے رہیں اور باهر کے حالات سے باخبر رہیں.‏
‏4-اپنی ہمت بحال رکهیں.‏‎
‏5- اگلے چند دن میں آپ ریڈیو ایکٹو سکنس کا شکار ہوسکتے ہیں جس میں آپ کو تیز بخار، گهٹن، الٹیاں ہوسکتی ہیں. اپنے پاس موجود ادویات کو استعمال کریں.

دهماکے کے زیاده سے زیاده 5 دنوں بعد امدادی ٹیمیں اور فوجی دستے آپ کے علاقے میں پهنچ جائیں گے.ریڈیو سنتے ریہں جب آپ کو یقین هوجائے کے آپ کے علاقے میں امدادی سرگرمیاں شروع ہوچکی ہیں تو باهر نکل کر قریب ترین امدادی کارکن سے فوری رابطہ کریں تاکہ آپ کو تابکاری کے علاقے سے فوری طور پر نکالا جاسکے.
اگر تو کوئی امدادی ٹیم آپ تک نا پہنچ سکے تو بیس دن بعد پناه گاه سے نکلیں. اب تک تابکاری کا طوفان تهم چکا ہوگا.
زندگی کی طرف سفر........
پناه گاه سے نکلتے ہی ممکن آپ کو پہلا احساس یہی ہو کہ لاکهوں میں سے صرف آپ ہی زنده بچے ہیں. اب جس قدر جلدی ممکن ہو علاقہ چهوڑدیں.

یٹم بم پھٹتے ہی فضا میں دھویں کی اک چھتری بنتی ہے جس کی اونچائی تقریبا ڈیڑھ کلو میٹر ہے۔۔اگر آپ اس چھتری سے ڈیڑھ کلو میٹر کی حدود سے باہر ہیں تو آپ کے پاس دس سیکنڈ ہیں۔۔۔۔کسی مضبوط دیوار کے پیچھے الٹا لیٹ جائیں ہاتھوں سے کان بند کریں ٹانگیں اک دوسرے میں پھنسا دیں۔۔دس سیکنڈ بعد انتہائی زوردار دھماکہ ہو گا۔۔۔۔اسکے بعد آپ جلد سے جلداس ایریا سے دور ہوں اور زمین میں کسی جگہ چھپیں جو دس فٹ گہری ہو۔۔۔کپڑے اتار دیں غسل کریں۔۔۔۔۔اگر آپ دھماکے سے تین چار کلومیٹر دور ہیں تو دھماکے کی جگہ سے ہوا کا رخ جس طرف ہے ادھر سفر مت کریں۔۔۔سفر میں ہر تین گھنٹے بعد غسل کریں اور کپڑے تبدیل کریں۔۔۔!!!

یہ معلومات کسی کی بھی زندگی بچا سکتی ہیں لہذا اسے صدقہ جاریہ سمجھتے ہوئے دوست احباب میں ضرور شیئر کریں، شائدہماری کوئی کوشش کسی کی جان بچانے کا سبب بن جائے- اللہ تعالیٰ ہم سب کو ایسے حالات سے محففوظ رکھے! آمین!

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *