تیسرے ون ڈے کی وہ وجوہات جو پاکستان کی ہار کا سبب بنیں!

پرتھ -پاکستان اور آسٹریلیا کے مابین تیسرے ون ڈے میں شکست کی وجہ بننے والے ایسے مواقع کہ جان کر ہر پاکستانی  کو غصہ آنے لگے گا۔ آسٹریلیا کو جیت کیلئے ٹرننگ پوائنٹ بننے والا وہ موقع تھا جب پاکستانی کھلاڑیوں نے پیٹر ہینڈز کومب کو آﺅٹ کرنے کے دو مواقع ضائع کردیئے۔ اس کے بعد کینگروز دائیں ہاتھ کے بلے باز ہینڈز کومب نے 84 گیندوں پر 82 رنز کی اننگز کھیل کر اپنی ٹیم کی جیت میں کلیدی کردار اداکیا۔ جبکہ ان کے ساتھ آسٹریلوی قائد سٹیو سمتھ نے شاندار سنچری سکور کر کے اپنی ٹیم کو میچ جتوایا۔پیٹر ہینڈز کومب کو پہلا موقع اس وقت ملا جب وہ کیچ آﺅٹ ہوگئے مگر نو بال ہونے کے باعث ان کو بیٹنگ جاری رکھنے کا موقع مل گیا۔ آسٹریلوی بیٹسمین پیٹر ہینڈز کومب کو کو نوبال ہونے کی وجہ سے دوبارہ کھیلنے کا موقع مل گیا۔پاکستان اور آسٹریلیا کے مابین تیسرے ون ڈے میچ جنیدخان کی بال پرہینڈزکومب سلپ میں کھڑے شرجیل خان کو کیچ دے بیٹھے اور پویلین کی طرف واپس لوٹ رہے تھے کہ ری پلے میں دیکھنے کے بعد جنید خان کا پاﺅں کریز سے باہر نکل رہا تھا ۔جس کی وجہ سے ہینڈز کومب کو دوبارہ کھیلنے کا موقع مل گیا اوروہ پویلین جاتے ہوئے دوبارہ کھیلنے کیلئے واپس لوٹ آئے۔جب نوبال ہوئی توہینڈز کومب صرف 4رن پرکھیل رہے تھے۔ پیٹر ہینڈ زکومب کو ایک اور موقع اس وقت ملا جب تیسرے ون ڈے میچ کے دوران محمد عامر کی جگہ متبادل فیلڈر محمد نواز نے جنید خان کی بال پر14ویں اوور کی 5 ویںگیند پر ایک آسان کیچ چھوڑ دیا ۔تفصیلات کے مطابق محمد نواز نے ہینڈز کومب کا کیچ اس وقت چھوڑا جب وہ صرف 10 رنز بنا کر وکٹ پر موجود تھے۔یاد رہے محمد نواز کو فیلڈ نگ کیلئے محمد عامر کی جگہ جو کہ اپنا باﺅلنگ سپیل ختم ہونے کے بعد آرام کی غرض سے گراﺅنڈ سے باہر گئے تھے کی جگہ پر بلایا گیا تھا۔یاد رہے آسٹریلیا نے پاکستان کو تیسرے ون ڈے میچ میں بھی شکست دیکر پانچ میچوں کی سیریز میں 2-1 کی برتری حاصل کرلی ہے :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *