جعلی خان لوگوں کو بیوقوف بنارہا ہے ، آصف علی زرداری نے گو جعلی خان گو کا نعرہ لگا دیا !

12

مالاکنڈ ۔ سابق صدر آصف علی زرداری نے مشال خان کے قتل کی ذمہ داری وزیر اعظم نوازشریف پر عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”مشال خان کے قتل کا ذمہ دار وزیر اعظم کے فلسفے کو ٹھہراتا ہوں “۔ موجودہ حکمرانوں کو سی پیک کی سمجھ ہی نہیں ہے ۔ ججز نے بھی کہہ دیا ہے کہ گو نوا زگو جبکہ بچے بچے کی زبان پر بھی یہی نعرے ہے ۔”آپ کتنے بچوں کو جیلوں میں ڈالو گے “۔
مالاکنڈ میں عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے عمران خان کو بھی کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے نعرے لگائے کہ گو عمران گو ، گو جعلی خان گو ۔”جعلی خان لوگوں کو بیوقوف بنا رہا ہے اور ان کو بھی کہتا ہوں گو جعلی خان گو ۔”اگر میرے دور میں امریکا اتنا بڑا بم گراتا تو میں امریکا پہنچ جاتا اور ان سے بات کرتا “۔
انہوں نے کہا کہ جب شریف برادران جیلوں میں تھے تو معافی نامے دیکر چلے گئے ، جب جا رہے تھے تو میں نے ان سے کہا تھا کہ تم جا سکتے ہو مگر میں نہیں جا سکتاکیونکہ میں نے اپنی عوام کیساتھ رہنا ہے اور اپنے ورکرز کو چھوڑ کر نہیں جا سکتا ۔

سابق صدر آصف علی زرداری نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی نے عوام کو این ایف سی ایوارڈز کا تحفہ دیا مگر شبہازشریف خیبر پختونخوا کا این ایف سی کا حصہ بھی کھا رہا ہے تاہم ہم ان کے پیٹ سے یہ پیسہ واپس نکالیں گے ۔عطا ءآباد جھیل نہ بناتے تو سی پیک کیسے بنتا ۔پیپلز پارٹی نے ہمیشہ غریب عوام کے مسائل اور دھڑکن پر ہاتھ رکھا۔ہم اقتدار میں آکر فاٹا کو خیبرپختونخوا میں ضم کریں گے۔

پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین نے اپنے خطاب میں کہا کہ حکمرانوں کو سی پیک کی کوئی سمجھ نہیں ہے اور نہ ہی انہیں غریب کا کوئی درد ہے ، اقتدارمیں آکر لٹیروں کے پیٹ سے سب کچھ نکالوں گا ۔ہم نے خیبر پختونخوا کے لوگوں کو شناخت دی اور عوام کی خدمت کی قسم کھا رکھی ہے ۔سی پیک میں نے بلوچستان اور آپ لوگوں کیلئے بنایا تھا ، عوام کیساتھ مذا ق نہیں چلے گا ۔

انہوں نے وزیر اعظم کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ”میاں صاحب آپ ضیاءالحق کی سیاست کر رہے ہیں “، حکمرانوں کی خارجہ پالیسی ناکام ہو چکی ہے ، خیبر پختونخوا کے عوام کو کہتا ہوں کہ اپنے حق کیلئے کھڑے ہو جائیں کیونکہ جاتی امراءوالوں کو عوام کی کوئی فکر نہیں ہے ۔یہ سمجھتے ہیں کہ جب یہ اور انکے دوست امیر ہونگے تو ملک امیر ہو گامگر ہم سمجھتے ہیں کہ جب عوام کے حالات بہتر ہونگے تو ملک امیر ہو گا :۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *