یسّو ، پنجو اور لیکس !‎

naeem-baloch1

یسو، پنجو اور لیکس !
اوئے پنجو ، تمہارے بجے پر کیا گھڑی ہے ؟
نونے پو !
فٹے منہ ، بدتمیز کہیں کا ،یوں کرتے ہیں بات ؟چلو کان پکڑ لو ۔۔۔ اور ڈھونگی اونچی رکھنا!
پووووووووں
ناک جلا دیا۔۔۔۔جی کرتا ہے زور سے تمہاری تشریف پر ٹھڈا ماروں !
لیکن یسّو سرکار، یہ حرکت میں نے تو نہیں ، تم نے کی ہے !
گدھا کہیں کا! تشریف تمہاری اوپر ہے یا میری ؟
وہ تو ٹھیک ہے یسّوسرکار ، لیکن مولیوں کے پراٹھے آپ ایک عرصے سے کھا رہے ہیں ، ایسا تو ہونا ہی تھا !
منہ پھٹ!اب میں بتاؤں گا کہ تم کیا کیا کھاتے رہے ہو ! تم ایک ایسے پنجو ہو ، جس کے پنجوں میں چوہے ہیں ، یہ بو اسی سے آرہی ہے ، اگر تم نے ان چوہوں کو میرے حوالے نہ کیا تو میں تمہاری کھال اتار دوں گا !
اوہو! صرف یہ بات ہے ، یہ لو یہ سارے چوہے تمہارے حوالے !
اوئے تمہاری یہ جرأت! تم نے کان چھوڑ دیے !
یسّو سرکار ، ان کو تمہارے حوالے کرنے کے لیے کان تو چھوڑنے ہی تھے۔
نہیں ۔ تم کوئی کام کیے بغیران کو ہمارے حوالے کرو ، ورنہ بو ختم نہیں ہو گی ۔
ُ بُو تو اس وقت تک ختم نہیں ہو گی ، جب تک آپ مولی والے پراٹھے نہیں چھوڑتے !
فضول باتیں نہ کرو ،ان پراٹھوں سے کچھ نہیں ہوتا !
پوووووووںںں!!!!
دیکھا !پھر لیکس !
بالکل جھوٹ، بار باربو ، بو کا شور مچا کر تم ہی تو میری لیکس کو لیک کرتے ہو ، اب بس تمہاری جان بچنے کی صرف ایک ہی صورت ہے !
وہ کیا ؟
بتاؤ ٹا ئی ٹینک کب اور کہاں ڈوبا تھا ؟
15اپریل 1912،شمالی بحر اوقیانوس میں !
کتنے بجے ڈوبا تھا؟
گیارہ بج کر چالیس منٹ پر ۔
صبح تھی رات ؟
صبح ۔
ہوںںںںںںں۔ چلو ڈوبنے والوں کے نام اور پتے بتاؤ !
پنجو نے دوبارہ کان پکڑ لیے!

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *