وفاقی حکومت کی آئندہ بجٹ میں مہنگائی بم گرانے کی تیاریاں !

111

اسلام آباد ۔ وفاقی حکومت کی آئندہ بجٹ میں مہنگائی بم گرانے کی تیاریاں ، 350ارب روپے ریونیو حاصل کرنے کیلئے ایک ہزار سے زائد اشیا مہنگی کرنے کی تجویز زیر غور ہے ، الیکٹرانکس مصنوعات ، پرفیوم ، شیونگ فومز ، ٹوتھ پیسٹ ، شیمپو ، کریمز ، پائوڈر ، منرل واٹر ، کیچپ ، بسکٹ ، جوسز اور چاکلیٹ ، فریزرز ، فریج ، واٹر ڈسپنسر ، پنکھے ، سیٹلائٹ ڈش ، مائیکرو ویو اوون ، استری اور سیٹلائٹ ڈش پر کسٹمز ڈیوٹی بڑھانے کی تیاریاں شروع کردی گئی ہیں ،

ڈبہ پیک دودھ ، دہی پنیر ، شہد ، مشرومز اور اچار پر بھی کسٹمز ڈیوٹی میں ایک فیصد اضافے کی تجویز ہے جبکہ فرنیچر کی لکڑی اور میٹل پر ایکسائز ڈیوٹی کی شرح بڑھانے کی تجویز ہے ۔ ذرائع کے مطابق ٹیکس وصولیوں کے ہدف میں رواں مالی سال2016-17 کے 3621 ارب کے ہدف کے مقابلے میں تقریبا 400ارب روپے کا اضافہ کیا جاسکتا ہے اور ہدف 4 ہزار ارب روپے کے لگ بھگ ہوسکتا ہے ۔ ذرائع کے مطابق بینکوں سے لین دین پر ود ہولڈنگ ٹیکس کی موجودہ شرح 0.4فیصد سے بڑھا کر 0.6 فیصد کرنے کی تجویز ہے ۔ذرائع کے مطابق آئندہ مالی سال کے بجٹ میں سپر ٹیکس مزید ایک سال کیلئے جاری رکھنے کی تجویز ہے ، اقتصادی ترقی کی شرح موجودہ 5.7 فیصد کے ہدف کے مقابلے میں6 فیصد اوربجٹ خسارے کا ہدف رواں سال کی طرح نئے مالی سال میں بھی 3.8 فیصد کی شرح پر برقرار رکھنے کی تجویز ہے :۔

 

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *