سوالوں کا جنگل اور ابصارعالم 

naeem-baloch1

چیئرمیں پمرا ابصار عالم کی دہائی دیتی پریس کانفرنس نے جن ان گنت سوالوں کو جنم دیا ہے ، ان میں سے بعض بہت اہم ہیں ۔ مثلاً:
*پمراحکومت کی اتھارٹی استعمال کرتا ہے یا سٹیٹ کی ؟عام تاثر یہی ہے کہ حکومت کی ۔اگر یہ درست ہے تو یہ پریس کانفرنس کس کے خلاف با لواسطہ احتجاج ہے ؟
*بول اور پاک ٹی وی چینل بغیر کسی اشتہارات کے کام کر رہے ہیں ۔ ایسا پاکستان ہی میں نہیں شاید دنیا کے کسی ملک میں پہلا واقعہ ہے کہ بظاہر خالص نجی نیوز چینل بے تحاشا خرچ کر رہے ہیں ، آمدن ایک پائی نہیں ، لیکن پوری آن بان سے میدان میں موجود ہیں ۔ سوال یہ ہے کہ یہ انتہائی ’’ مقدس مشن ‘‘کیوں جاری و ساری ہے ؟کیایہ سب کچھ انتقام کے شعلے ہیں؟

Image result for absar alam* یا معاملہ اس سے ملتا جلتا ہے کہ ایک جرائم پیشہ حوالات میں بند تھا ، اتھارٹی نے کہا کہ جاؤ فلاں کی ٹھکائی کرکے آؤ ، یو ں دشمنی بھی نکال لی، قانونی تحفظ بھی حاصل ہو گیا اور یہ آپشن تو موجود ہے ہی باؤلے کتے کو کبھی بھی گولی ماری جا سکتی ہے !اس موضوع پر ہالی وڈ نے فلمیں بھی بنا رکھی ہیں ، ہنگرز گیمز اور دی کنڈمز(the condemned)کیا ابصار عالم اسی طرح کے مجرمین سے خوفزدہ ہیں ؟
* جن میڈیا ہاؤسز کی بدمعاشی کے خلاف دہائی دی گئی ہے، ان پر اسی(80) فیصد سے بھی زیادہ پروگرام ویوز پر مشتمل ہیں جو کہ چند مخصوص سیاسی پارٹیوں اور بعض شخصیتوں کی کردار کشی پر مشتمل ہیں ۔ ان پر نشر ہونے والے پروگرام کس اخلاقی ضابطے پر پورے اترتے ہیں ؟ کیا کوئی شخص اپنے کسی مخالف کے خلاف کسی اخبار میں کوئی ایسا اشتہار شایع کرا سکتا ہے کہ فلاں شخص میرے نزدیک ملک کا غدار ہے ، اس لیے اس کا سماجی بائیکاٹ کیا جائے ۔ اگر نہیں تو اتنی ڈھٹائی سے یہ ساری نشریات کیا کسی کی ہلا شیری سے جاری ہیں؟ اور پابندیوں کی زنجیروں کو سٹے آرڈر کے ہتھوڑوں سے بے اثر کرنے والے انصاف اور آزادی رائے کے تقاضے پورے کر رہے ہیں یا معاملہ کچھ اور ہے ؟
* یہ جو عامر لیاقت مختلف چینلزکے ساتھ متعہ قسم کا معاہدہ کرتے کرتے اب بول میں بول بول کر ہلکان ہو رہے ہیں، ان کا پٹا کس کے ہاتھوں میں ہے ؟عامر لیاقت کاایم کیو ایم سمیت کسی سیاسی پارٹی سے توبظاہر اب کوئی تعلق نہیں،پھر وہ کس کا کھونٹا ہے جس کے ساتھ وہ بندھے ہوئے ہیں ؟
*مبشر لقمان مورچے بدلتے رہتے ہیں لیکن ان کا نشانہ نہیں بدلتا ، اور ہر قسم کی واہیات گفتگو اور الزامات کے بعد بھی عدالت ان کا کچھ نہیں بگاڑ سکی، سوال یہ ہے کہ وہ کس کی ناف او معاف کیجیے گا ناک کا بال ہیں ؟
*ایک پرانی پیشن گوئی ہے کہ انتخابات 2018میں ایم کیوایم کے تمام دھڑے متحد ہو کر ایک کنگز سیاسی پارٹی میں بدل جائیں گے اور اس کی قیادت سیدپرویز مشرف فرمائیں گے،کہیں یہ بول جیسے تمام ڈھول اس پیشن گوئی میں جان ڈالنے کا کوئی ایجنڈا تو پورا نہیں کر رہے ؟
* پمرا اگر خود ہی انصاف کی تلاش میں ہے تو سوال یہ ہے کہ وہ عوام اور دوسرے متعلقہ اداروں کی کیاخدمت کر پائے گی ؟ اگر عدلیہ حکومتی یا انتظامیہ کے دباؤ کی موجودگی میں انصاف کے تقاضے پورے نہیں کر سکتی تو پمرا سے کیا اور کیوں توقعات وابستہ کی جاسکتی ہیں ؟ئ* اب تک اس پریس کانفرنس کا کسی اتھارٹی نے کوئی نوٹس لیا ؟ اگر نہیں تو کیوں ؟ ابصار عالم کی اتنی مسکینی اور بے بسی کا کیا سبب ہے ؟

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *