حامد کرزئی کے نئے اعلان سے افغان صدرکو شدید جھٹکا!

Image result for ‫حامد کرزئی‬‎

کابل -سابق افغان صدر حامد کرزئی نے کہا ہے کہ وہ ماہ رمضان میں وزیر اعظم نواز شریف کی دعوت پر پاکستان کا دورہ کرینگے جبکہ افغان حکومت کے چیف ایگزیکٹیو عبداللہ عبداللہ نے کہا ہے کہ وہ پاکستان کا دورہ حالات بہتر ہونے کے بعد کریںگے ۔ یہ بات دونوں افغان رہنماﺅں نے کابل میں پاکستانی صحافیوں کے ایک گروپ سے الگ الگ گفتگو میں کہی۔ حامد کرزئی نےکہا کہ انہوں نے دعوت منطور کرتے ہوئے وزیر اعظم کو ایک جوابی خط بھی لکھا ہے جسے انہوں نے ”نجی “ قرار دیتے ہوئےصحافیوں کو دینے سے انکار کیا۔

  تاہم انہوں نے یہ نہیں بتایاکہ اس وقت جانے کا فیصلہ کیوں کیا۔ ایک سوال کے جواب میں کہ ماضی میں تو ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے بیس دوروں سے کوئی فائدہ نہیں ہوا تو اس مرتبہ ایک بار پھر وہ کیوں جانا چاہ رہے ہیں تو ان کا کہنا تھا کہ ’امید کی وجہ سے ۔ اگر مجھے اس امید کے نتیجے میں سوسال بھی پاکستان جانا پڑے تو میں جاتا رہوں گا ۔ اسے تمام زندگی نہیں چھوڑوں گا ۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ پاکستان کو ایک مکمل ساتھی کے طور پر ساتھ لے کر چلنا چاہتے ہیں۔ یہ میر ی خوش قسمتی ہو گی اگر میں دونوں ممالک کے درمیان ’ پیس میکر ‘ کا کردار ادا کر سکوں ۔ میرے لیے اس سے بڑی بات کوئی اور نہیں ہو گی لیکن تالی بجانے کیلئے یاد رہے کہ دو ہاتھ چاہیے ہوتے ہیں۔

دوسری جانب چیف ایگزیکٹیو عبداللہ عبداللہ نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت پاکستانی طالبان کو دہشت گرد اور دشمن قرار دے چکی ہے۔ ہمارے سپاہیوں نے ان کے خلاف لڑتے ہوئے قربانیاں دی ہیں۔ ہم ٹی ٹی پی ، القاعدہ یاداعش میں کوئی فرق نہیں کرتے ہیں۔ ہم یا امریکیوں نے ان کے خلاف کارروائیاں کی ہیں۔ افغانستان کے چیف ایگزیکٹیو ڈاکٹر عبداللہ عبداللہ کا کہنا ہے کہ ان کے ملک کے پاس پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کی نہ تو صلاحیت ہے اور نہ ہی نیت ۔ ان کے بقول جو پاکستان کو نقصان پہنچانا چاہے گا وہ افغانستان کو نقصان پہنچائے گا۔ پاکستان اور افغانستان کے درمیان سرحدی کشیدگی کے پس منظر میں افغانستان کے چیف ایگزیکٹیو عبداللہ عبداللہ کا ایک خوش آئندہ بیان سامنے آیا ہے۔ کابل میں پاکستانی صحافیوں کے ایک وفد سے گفتگو کے دوران ان کا کہنا تھا ، ” جو پاکستان کو نقصان پہنچائے گا، وہ دراصل افغانستان کو نقصان پہنچائے گا :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *