سعودی عرب نے غیر ملکی ملازموں پر بجلی گرادی!

ریاض -سعودی عرب میں مختلف شعبوں سے غیر ملکیوں کو نکالنے کا مرحلہ وار عمل تو پہلے جاری تھا لیکن اب منسٹری آف سول سروس نے ایک بڑا فیصلہ کرتے ہوئے تمام وزارتوں اور حکومتی اداروں کو کہہ دیا ہے کہ اگلے تین سال کے دوران سرکاری شعبے سے تمام غیر ملکیوں کو نکال دیا جائے۔

سعودی گزٹ کی رپورٹ کے مطابق وزارت کا کہنا ہے کہ گزشتہ سال کے احتتام تک سرکاری میں 70 ہزار غیر ملکی کام کر رہے تھے ۔ پیر کے روز منعقد ہونے والی ایک میٹنگ میں نائب وزیر عبداللہ الملفی کا کہنا تھا کہ 2020 تک سرکاری شعبے سے تمام غیر ملکیوں کو نکال دیا جائے۔ اس میٹنگ میں سینئر افسران ، ہیومن ریسورس ماہرین اور متعدد دیگر شعبوں و یونیورسٹیوں کے نمائندگان نے بھی شرکت کی۔ شرکاءکا کہنا تھا کہ سرکاری شعبے سے تمام غیر ملکیوں کو نکالنے کا فیصلہ مملکت کے ویژن 2030 پر عملدرآمد کیلئے ایک اہم قدم ثابت ہو گا۔ دریں اثنا سعودی شہریوں کو سرکاری شعبے کی ذمہ داریوں کے لئے تیار کرنے کے لئے خصوصی تربیتی پروگراموں کا بھی انعقاد کیا جا رہا ہے :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *