اپنے بچوں پہ بھروسہ کریں، زمانے پہ نہیں

طوبیٰ طارق خان

tooba khan

جیسا کہ ہم دیکھتے ہیں کہ ہم والدین بہت مصروف ہو گئے ہیں کہ ہمیں ہمارے بچوں کی تربیت کا بھی وقت نہیں ملتا ہم اپنے بچوں کو اعلیٰ سے اعلیٰ تعلیم فراہم کراہے ہیں لیکن تربیت ٹی وی پہ چلنے والے ناقص کارٹونز کے ہاتھ میں ہے والدین اتنے مصروف ہوگئے ہیں۔
انکا بچہ ٹی وی پہ کیا دیکھ راہا ہے کیا سیکھ راہا ہے کچھ خبر نہیں.بچوں کی پہلی اور بہترین تعلیم و تربیت گاہ ماں کی گود ہوتی ہے۔ لیکن آج کل کی ماؤں کی گود تو Install Facebook اور خودپسندی یعنی selfies نےلے لی ہے بچوں کے سوالوں اور ان کے ساتھ وقت ذایع کرنے سے بہتر ہے بچوں کو کارٹونز یا موبائل گیمز میں لگا دیا جائے تو کوئی مضائقہ نہیں.-Related imageاب بچے کیا دیکھ راہے ہیں کیا سیکھ راہے ہیں کچھ پتہ نہیں بچے تو پانی کی مانند ہو تے ہیں جیسے سانچے میں ڈالو ڈھل جاتے ہیں یا جو رنگ ڈالو وہ رنگ پکڑ لیتے ہیں کیا آج کل کے کارٹونز بچوں کیلئے بنائے جا رہے ہیں کیا یہ بچوں کے دیکھنے لائق ہیں یہ دیکھنا والدین کی ذمہ داری ہے.-آج کل بچے اپنی عمر سے بڑی باتیں کرتے ہیں یا بدتمزی کا مظاہرہ کرتے ہیں یہ سب ان کارٹونز کی بدولت ہیں جو روز بنا کس بڑے کی موجودگی یا نگرانی میں دیکھ رہے ہوتے ہیں۔خدایا اپنے بچوں کی کی تربیت پر توجہ دیں بچوں سے زیادہ ضروری کوئی کام کوئی مصروفیت نہیں والدین معاشرے کو انسان دیتے ہیں اچھا یا برا وہ والدین کی تربیت پہ ہے اپنے بچوں کو ٹی وی یا موبائل فون کی نظر نہ کریں آپ اپنی نگرانی میں کارٹونز یا موبائل فون دیکھنے کی اجازت دیں وہ بھی ایک مخصوص وقت تک اور چھوٹی عمر میں موبائل فون دینے سے پرہیز کریں یا اپنی نگرانی میں استعمال کرائیں.ہمیں بچوں پہ بھروسہ اعتماد ہوتا ہے لیکن زمانے پہ نہیں.

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *