رنبیرکپورکے کیرئیرکی منفرد فلم جگا جاسوس

محمد اشعر

muhammad ashar

فلم جگا جاسوس میں رنبیرکپوراورکترینہ کیف کی جوڑی تیسری بار بڑے پردے پردھوم مچانے کوتیارہے۔ اس سے پہلے رنبیرکپوراورکترینہ کیف'' عجب پریم کی غضب کہانی'' اور'' راج نیتی'' جیسی سپر ہٹ فلموں میں جلوہ گرہوچکے ہیں۔ اب ایک بارپھریہ جوڑی بڑی سکرین پردھمال مچانے کےلیے بالکل تیارہے۔ اس فلم کا انتظارایک طویل مدت سے کیا جارہا ہے کیونکہ یہ فلم پہلے 16 نومبر 2016ء پھر 19 دسمبر 2016ء اس کے بعد اپریل تک ملتوی ہونے کے بعد آخرکار14 جولائی 2017ء کوسنیما ہال میں دستک دے کربڑی سکرین کی زینت بن ہی گئی ہے۔

جگا جاسوس اوررنبیرکپور

فلم جگا جاسوس میں اپنے کردارکولے کر رنبیرکپور کافی عرصے سے خبروں میں نمایاں رہے ہیں۔ رنبیرکا کہنا ہے کہ فلم میں جگا کی دنیا بہت الگ ہے۔ اس وجہ سے اس کردار کے لیے رنبیر کے کافی محنت کی ہے اورفلم میں دسویں کلاس کے بچے کی طرح نظرآنے کے لیے نہ صرف اپنا وزن کم کیا ہے اورساتھ ساتھ ہیئراسٹائل بھی بدلا ہے۔ رنبیرکا کہنا ہے کہ بچن ہی سے ان کوجاسوسی کرنے کا کافی شوق تھا۔

Image result for Jagga Jasoos

جب رنبیراسکول میں تھے توپورے اسکول کی خبریں ان کے پاس ہوا کرتی تھی اوراسکول کے باقی لوگ خبروں کی تصدیق کے لیے رنبیرسے رابطہ کرتے تھے۔ اوراب جب وہ فلموں میں کام کررہے ہیں تووہاں کی بھی پوری خبریں ان کے پاس ہوتی ہے۔ ساتھ ہی اداکارکا یہ بھی کہنا تھا کہ ابھی کسی کوپتا ہی نہیں ہے کہ میں کتنا بڑا جاسوس ہوں۔ فلم انڈسٹری میں کہاں کہاں کیا چل رہا ہے ان کوسب پتا ہے۔ رنبیرکے مطابق ان کی کئی فلمیں فلاپ ہونے کے بعد بھی انوراگ باسو نے جگاکے کردار کے لیے رنبیرکپوران کی پہلی پسند تھے جس کے لیے رنبیرکپور ان کے خاصے شکرگزارہیں۔

فلم کا مرکزی خیال اورکردار

فلم کے اہم کرداروں میں رنبیرکپور یعنی جگا، کترینہ کیف یعنی شرتی، سسواتا چترجی یعنی بخشی جگا کا باپ اورشربا شکلا یعنی پولیس انسپکٹر کے کرداروں میں اپنا جادو جگاتے نظرآتے ہیں۔ فلم کی کہانی جگا جو کہ بادل بخشی کا لے پالک بیٹا ہے اوراچانک بادل ایک دن جگا کوچھوڑ کرچلاجاتا ہے یہ کہہ کرکہ وہ واپس لوٹ آئے گا۔ مگروہ نہیں لوٹتا، جگا کافی تیز ہے مگرمیں بولنے میں کافی ہکلاتا ہے جس پراس کے باپ نے اس کو سمجھایا تھا کہ اگروہ گا کراپنی بات بولے گا تونہیں ہکلائے گا۔ وقت گزرتا جاتا ہے اورجگا بڑا ہوجاتا ہے مگربادل نہیں لوٹتا۔ دوسری طرف جگا کوہربات کی گہرائی میں جانے کی عادت سی پڑجاتی ہے۔ انہی سب باتوں کے ہوتے ہوئے جگا اپنے اسکول میں قتل کا کیس منتقی انجام تک پہنچاتا ہے۔ اب جگا کویہ پتا لگانا ہے کہ اس کے کھوئے ہوئے باپ کہاں ہے اوروہ کیا راز ہے جس کی وجہ سے اس کا باپ غائب ہوا ہے۔ اسی کشمکش میں شرتی یعنی کترینہ کیف بھی ان کے ساتھ مل جاتی ہے پھرجگا کس طرح اپنے باپ کا اورراز کا پتا لگاتا ہے یہ رازتوفلم دیکھنے کے بعد ہی کھلے گا۔  فلم میں اگراداکاری کی بات کی جائے تورنبیرکپوراورکترینہ کیف دونوں ہی مکمل طریقے سے اپنی اداکاری کے جوہردکھاتے نظرآتے ہیں۔ خاص کرکترینہ کیف نے ایک جرنلسٹ کے کردارمیں جان ڈالنے کےلیے پہلے وہ کئی رپوٹرزسے جا بجا خودملیں تاکہ وہ اس کردار میں اصل رنگ ڈال سکے۔ یہ ایک میوزیکل فلم ہے اورزیادہ ترڈائیلاگ بھی گا کرہی بولے گئے ہیں۔ اگربات اداکاری کی ہوہی رہی ہے توبادل جوکہ جگا کے باپ کے کردارمیں دکھائی دے رہے ہیں ان کی اداکاری کوبھی بالکل بھی فراموش نہیں کیا جاسکتا جوکہ کئی مقامات میں فلم میں شائقین کی آنکھوں میں آنسولانے کا باعث بنے ہیں۔

فلم ریلیزسے پہلے تناومگرفلم کو نقصان نہ ہونے دینے کا دعویٰ

فلم جگا جاسوس کولیکرجہاں رنبیرخبروں کی زنیب بنے تووہیں کترینہ بھی پیچھے نہ دکھائی دیں۔ کترینہ کا کہنا تھا کہ ان کوکچھ دنوں پہلے یہ سننے کو ملا کہ وہ رنبیرکے ساتھ فلم کی پروموشن میں نظرنہیں آئیں گی اوران دونوں کی وجہ سے فلم بننے میں کافی دیربھی ہوئی ہے۔ ان ساری خبروں کو مسترد کرتے ہوئے کترینہ کا کہنا تھا کہ ایسا کچھ بھی نہیں ہے یہ فلم ان دونوں کے لیے بہت ہی اہم ہے۔ جب ہم نے اس فلم میں اتنی محنت کی ہے توآپسی جھگڑے کی وجہ سے فلم کو نقصان نہیں ہونے دینگے۔ اوراداکارہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ فلم کے ریلیز سے کچھ دن پہلے وہ کافی تناومیں آجاتی ہے اس لیے وہ جگا جاسوس کو لے کربھی وہ خاصے تناومیں ہے اوران کونہیں پتا کہ کیا ہوگا۔ مگرساتھ ہی کترینہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ تناو صرف ان کو ہی نہیں بلکہ ٹیم کے ہربندے کوہوتا ہے۔

فلم کا میوزک اورہدایت کاری

فلم کا میوزک پریتم نے دیا ہے اوردیکھا جائے توفلم میں تقریباً دس سے بھی زیادہ گانے ہیں مگرجوچھاپ گانا ''غلطی سے مسٹیک'' اور'' الوکا پٹھا'' نے چھوڑدی ہے وہ دم باقی گانوں میں نظرنہیں آتا۔ فلم کا میوزک اوربیک گراونڈ میوزک بس ٹھیک ہے۔ جگا جاسوس کی ہدایت کاری، پروڈیوسر،کہانی اوراسکرین پلے، یہ سارے کام انوراگ باسو نے کیے ہیں اوران ساری فیلڈزمیں سے کسی ایک میں بھی وہ اپنا سکہ پورے طرح جماتے نظرنہیں آتے ہیں۔ فلم میں کترینہ بچوں کوکتاب سے جگا کی کہانی سناتی دکھائی دیتی ہیں۔

Image result for Jagga Jasoos

فلم کے پہلے ہاف میں سین بلاوجہ لمبے اوربغیرکسی سرپیر کے نظرآتے ہیں۔ فلم کا اسکرین پلے میں بھی پہلا ہاف اتنا دم دارنظرنہیں آتا۔ اوربات اگرڈئیلاگز کی کی جائے تووہ توفلم میں ہے ہی نہیں اتنے، جوہیں وہ بھی رنبیرکپورگاتے نظرآتے ہیں۔ مگرجب فلم انٹرول کے بعد ایک بارپھرکہانی پکڑنے کی کوشش کرتی ہے توپھرسے ایک بارانوراگ باسو کچھ خاص طریقے سے شائقین فلم کوکرتے دکھائی نہیں دیتے۔ اس فلم کے بارے میں یہ کہنا غلط نہیں ہوگا کہ اگرفلم کو کامک کی طرح دیکھا جائے توٹھیک ہے مگرکہیں بھی لاجک لگانے کی کوشش کی گئی توفلم وہیں سے سمجھ سے بالکل باہرہونا شروع ہوجاتی ہے۔

فلم کی ہدایت کاری کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہےکہ فلم کے آخرمیں جب کہ کترینہ کا ایک ہاتھ پہلے ہی بری طرح سے زخمی ہے اس کے باوجود کبھی وہ ٹرین سے چھلانگ لگاتی نظرآتی ہے توکبھی پہاڑوں سے کودتی دکھائی دیتی ہے اوران سب کے بعد بھی کترینہ کیف بچ جاتی ہے

جگا جاسوس کو کیوں دیکھا جائے؟

فلم جگا جاسوس تقریباً 180 منٹ کی فلم ہے جوکہ 5 سال کی طویل مدت میں تیارکی گئی ہے اس فلم کا بجٹ تقریباً 100 کروڑ ہے اورفلم میں انوراگ باسوایک نئی روایت قائم کرتے نظرآئے ہیں جوکہ فلم کا ٹوٹل گانوں پرانحصارکرنا ہے۔ فلم کی لوکیشن کافی اچھی ہے اورفلم کے گانوں میں رنبیرکافی مختلف ڈانس کرتے نظرآئے ہیں مگرساتھ ہی فلم میں رومانس اورجذباتی مناظرکی خاصی کمی نظرآتی ہے۔ پھر بھی فلم کودیکھا جائے توخاصی طویل ہے جوکہ شائقین فلم کوبورہونے پرمجبورکرتی ہے۔ یہی فلم اگر 120 منٹ کی ہوتی توشاید قابل قبول ہوتی مگرپھربھی فلم کوایک بارتوجاکردیکھنا بنتا ہے۔ مگررائے میں میں اس فلم کو 5/2 دونگا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *