بول ٹی وی میں کیا ہورہا ہے؟ سینئرپروڈیوسر نے اندر کی کہانی بتا دی

Image result for bol channel

"بول " ٹی وی میں ایسا کیا ہورہا ہے جس کی وجہ سے اینکرز اور پروڈیوسرز مسلسل چینل چھوڑتے جارہے ہیں- تفصیلات کے مطابق بول ٹی وی کے کئی اور اینکرز اور ملازمین بھی استعفیٰ دینے کے لیے تیار بیٹھے ہیں- بول ٹی وی نے اپنا آغاز کیا تو اس کا نعرہ تھا کہ وہ پاکستان کا سب سے بڑا نیوز چینل ہے لیکن یہ دعویٰ کبھی سچ نہ ہوسکا- بول ٹی وی کے ایک سینئر پروڈیوسر نے نام نہ بتانے کی شرط پر بتایا کہ بول کے ملازمین کی تنخواہیں 3 ماہ سے رکی ہوئی ہیں، ملازمین اگر دفتر کا واش روم بھی استعمال کرتے ہیں تو تنخواہ میں سے اس کی بھی کٹوتی کی جاتی ہے-جو پیکج ملازمین کو دیا جاتا ہے اس میں دفتری استعمال کی مختلف چیزوں کا کرایہ کاٹ لیا جاتا ہے تاہم اب تو تین ماہ سے تنخواہیں بھی نہیں مل رہیں- نان پروفیشنل سٹاف نے سارے ماحول کا بیڑا غرق کرکے رکھ دیا ہے- جیو نیوز کے خلاف عوام کے احتجاج کی چار سالی پرانی وڈیوز یہ کہہ کر چلائی جارہی ہیں کہ  گویا لوگ آج احتجاج کر رہے ہیں-پروڈیوسر نے بتایا کہ عامر لیاقت اور ساجد حسن کو بھی مجبور کیا جاتا تھا کہ وہ حکومت اور جیو کے خلاف جی بھر کے بولیں، ساجد حسن نے ایک دو دفعہ انکار کیا تو انہیں نکال دینے کی دھمکی دی گئی-پروڈیوسر نے بتایا کہ بول ٹی وی کی انتظامیہ اشتہاروں کے لیے سر توڑ کوشش کر رہی ہے لیکن اشتہار نہیں مل رہے تاہم ٹی وی پر یہ بتایا جاتا ہے کہ ہم خود اشتہار نہیں لے رہے- انہوں نے کہا کہ چینل بری طرح برباد ہوچکا ہے اور اب تو یہ حال ہے کہ ڈرائیورں اور ٹیکنیشنز کو بھی تنخواہوں کی ادائیگی نہیں ہورہی-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *