یہ ہے وہ شخص جس نے حسین نواز کی تصویر لیک کی

leak

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )ایس ایم نامی شخص مشترکہ تحقیقاتی ٹیم ( جے آئی ٹی) کے ارکان کے ساتھ کام کر رہا تھا جس کی خدمات متعلقہ ادارے سے حاصل کر لی گئی تھیں جس کا انتظامی کنٹرول وزارت دفاع کے پاس ہے ۔ معاملے سے متعلقہ ایک اعلی حکومتی افسر نے بتایا کہ ایس ایم نامی وہ شخص ہے جس نے مبینہ طور پر حسین نواز شریف کی وہ تصویر لیک کی تھی جس سے تنازع پیدا ہو اور شریف خاندان کی طرف سے شدید ردعمل سامنے آیا ۔افسر نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ یہ صرف ایک ہی نام ہے ۔ انہوں نے اس شخص کے متعلقہ محکمے اور اس کے فرائض کی نوعیت کے حوالے سے کچھ نہیں بتایا یہ بھی واضح نہیں اس شخص کے خلاف کوئی انظباطی کاروائی کی گئی ہے یا نہیں ۔ جب اس شخص کے متعلق مزید تفصیلات کے حوالے سے استفسار کیا گیا تو سنیئر افسر نے بتایا کہ حقیقت یہ ہے کہ ان لوگوں نے اعلی ترین عدالت کو نام بتانے سے کوئی گریز نہیں کیاِ ہم یہ کیسے جان سکتے ہیں کہ یہ خفیہ ’کوراپ‘نام تو نہیں تاہم یہ کوئی اعلی افسر نہیں ہے ۔آفسر نے کہا سپریم کورٹ کو صرف اس شخص کا نا م بتایا گیا ہے جس نے سابق وزیراعظم کے بڑے بیٹے کی توہین آمیز تصویر جاری کی تھی جو جے آئی ٹی میں تحقیقاتی ٹیم کا سامنا کرنے آئے تھے اور اس کے ادارے کا نام خفیہ رکھا گیا ہے جس سے یہ احساس مزید گہرا ہو گیا ہے ۔ حسین نواز کے وکیل حارث نے فاضل عدالت سے تصویر لیک کی تحقیقات کے لئے کمیشن بنانے کی اسدعا کی تھی جو عدالت نے یہ کہتے ہوئے مسترد کر دی تھی کہ اس معاملے کی تحقیقات کے لئے کمیشن کا قیام سپریم کورٹ کے دائر کردہ اختیار میں نہیں ہے وفاق چاہے تو ایسا کر سکتا ہے ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *