الطاف حسین نے اپنے ساتھ ہونے والے "ظلم" کی داستان بیان کردی

huss
لندن: غیر ملکی ذرائع نے خبر دی ہے کہ امریکن کانگریسی لیڈر ڈانا روہرابچر نے متحدہ رہنما الطاف حسین سے لندن میں متحدہ کے بین الاقوامی سیکرٹرییٹ میں ملاقات کی جو 4 گھنٹے تک جاری رہی.اس ملاقات میں بلوچ رہنما خان آف قلات میر سلیمان داود بھی شریک رہے.متحدہ رہنما نے امریکی رہنما کو کراچی اور سندھ میں رینجرز کے ہاتھوں متحدہ کارکنان کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں اور ظلم کے بارے میں بتایا.انہوں نے بتایا کہ چھاپوں کے دوران سیکیورٹی اداروں کے افراد کا رویہ ہتک آمیز اور زبان گندی ہوتی ہے.وہ خواتین اور بزرگوں کے ساتھ بد تمیزی کرتے ہیں.انہوں نے بتایا کہ متحدہ کارکنان کے ساتھ نہ صرف انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہوتی ہے بلکہ غیر قانونی گرفتاریاں بھی ہوتی ہیں.میرے اپنے کئی رشتہ دار غیر قانونی طور پر گرفتار کئے گئے ہیں.پاکستان کے قانون نافذ کرنے والے ادارے قانون کے سب سے زیادہ توڑنے والے بن چکے ہیں.انہوں نے یہ بھی بتایا کہ کس طرح پنجابی رینجرز کراچی کی مہاجر قوم کے ساتھ ظلم کر رہی ہے اور کئی افراد لاپتہ ہیں.انہوں نے بلوچوں پر ہونے والے ظلم. ماورائے قانون گرفتاریاں اور قتل وغیرہ کا بھی تذکرہ کیا.اور بتایا کہ پنجابی فورسز وہاں کیسے کیسے ظلم کر رہی ہیں.کانگریسی رہنما نے انسانی حقوق کی اس خلاف ورزی پر گہرے افسوس کا اظہار کیا.اور متحدہ کو اپنی مکمل سپورٹ کا یقین دلایا.مجلس کےآخری حصے میں بلوچ رہنما میر سلیمان داود نے بھی شرکت کی.الطاف حسین اور سلیمان داود نے مل کر ساتھ کام کرنے کا عزم کیا.کانگریسی رہنما نے دونوں کو اپنی کوششوں کا یقین دلایا.

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *