فری لانسنگ کابڑھتا ہوارجحان

سید بدرسعید

syed badar saeed

میرے دوست  بتا رہے ہیں کہ گوگل سافٹ ویئر آ گیا ہے جس میں آپ بولتے جاتے ہیں اور  سافٹ ویئر آواز سن کر اردو میں لکھتا جاتا ہے ۔ میرے دوست اس سہولت پر بہت خوش ہیں ۔ میرے لئے بھی یہ بہت اہم سافٹ ویئر ہے کہ میں اب کئی کتب بہت تیزی سےلکھ پائوں گا۔ اس کے باوجود میں خوفزدہ ہوں ۔ یہ سافٹ ویئر جتنا اہم ہے اتنا ہی خطرناک بھی ہے ۔ اس نےمجھے ایک بار پھر یقین دلا دیا ہے کہ اگلے پانچ سال میں بہت زیادہ لوگ بےروزگار ہو جائیں گے  ۔ اس سے بھی زیادہ یقین اس بات پر ہو گیا ہے کہ اگلے پندرہ برس کے اندر اندر  پاکستان میں  ملازمت پیشہ افراد  برے حال  میں ہوں گے ۔  صرف اس سافٹ ویئر اور اس جیسے مزید آنے والے سافٹ ویئرزکی بدولت ہی اگلےپانچ برس میں سٹینو ٹائپسٹ ، کمپوزر اور پی اے وغیرہ کی ملازمتیں نکلنا بند ہو جائیں گی یا ان کی ریشو بہت کم ہو جائے گی  اور پہلے سے موجود لوگوں کو  ملازمت سے جواب ملنے کا سلسلہ شروع ہو جائے گا ۔ پاکستان میں اس شعبہ میں لاکھوں لوگ ملازمت کر رہے ہیں ۔  اسی طرح دیگر شعبوں میں بھی ملازمت کرنے والوں کو مزید پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑے گا ۔ مستقل ملازمتیں تو پہلے ہی ختم کرنے کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے ۔  ملازمتوں میں یہ دور بھی شروع ہو چکا ہے کہ جوں جوں آپ تجربہ کار ہوتے جائیں توں توں آپ کے سر پر نا اہلی کی تلوار لٹکتی جاتی ہے کیونکہ جتنی تنخواہ آپ لیتے یا لینا چاہتے ہیں اس میں دو نئے لڑکے رکھ کر بھی کچھ پیسے بچانے کی کوشش کی جاتی ہے ۔

Related image

 ایک نیا سلسلہ "فری لانسنگ " کا بھی پاکستان میں شروع ہو چکا ہے ۔ اس سے بھی ملازمت پیشہ افراد کی مشکلات میں اضافہ ہو رہا ہے اور مستقبل میں بہت نقصان ہو گا۔ مثال کے طور پر پہلے چھوٹے پروڈکشن ہائوس بھی اپنا دفتر بناتے تھے ، سٹاف رکھتے تھے اورکیمرے ، لائٹس وغیرہ خریدتے تھے۔ اب دفتر کی ضرورت بھی ختم ہوتی جا رہی ہے ۔ بس پراجیکٹ پکڑا ، فری لانس کیمرہ مین کو ہائر کیا ، این ایل ای سے کام کروایا ، لائٹس ، کیمرے سبھی کچھ کرایہ پر لیا اور پراجیکٹ مکمل کر کے اپنے پیسے جیب میں ڈالے اور ہاتھ جھاڑتے ہوئے گھر آ گئے ۔ مستقل ایک بھی ملازم نہیں رکھا جا رہا ۔ فری لانسنگ کا میرا اپنا تجربہ یہ رہا ہے کہ جتنے پیسے میں اپنے ادارے سے پورے مہینے کام کرنے کے لیتا تھا اتنے ہی میں ایک دو گھنٹے کام کرنے کے کماتا رہا ۔ اب ایسا کام اگر ہفتے میں دو بار بھی کرنا پڑے تو اس کا مطلب فی ہفتہ میں نے پورے مہینے کام کرنے سے دگنا کمایا ۔یہی تجربہ مجھے فری لانسنگ کی طرف لایاتھا۔مستقبل میں پاکستان میں یہی سلسلہ چلتا نظر آ رہا ہے جس کا مطب ہے ملازمتوں سے مزید لوگ نکال دیئے جائیں گے ۔ اگر میں مجموعی طور پر صورت حال کو دیکھوں  تو اس کا خلاصہ یہ ہے کہ اگلے پندرہ برس میں چھوٹے دفاتر کا کانسیپٹ ختم ہو رہا ہے ۔  آپ ابھی بھی گلوریا جینز  کیفے موقا، سیکنڈ کیفے یا دیگر کافی ہائوس چلے جائیں تو آپ کو وہاں ایک کافی کا آرڈر کر کے لیب ٹاپ پر کام کرتے لوگ ملیں گے یابزنس میٹنگز چل رہی ہوں گی ۔ ان لوگوں نے اپنے دفاتر اور سٹاف  ختم کر دیئے ہیں لیکن یہ مہنگی ڈیلز کر رہے ہیں اور بڑے پراجیکٹس پر کام کر رہے ہیں ۔ اب اگر دفتر ہی نہیں ہے تو  اس کا مطلب ان کے چپڑاسی، خاکروب، پی اے وغیرہ بھی نہیں ہیں ۔     سرکاری دفاتر بھی مستقل ملازمتوں سے کنٹریکٹ ملازمت پر شفٹ ہو رہے ہیں ۔ آن لائن کاروبار اور دکانیں کھل رہی ہیں ۔ یہاں تک کہ لاہور میں آن لائن آرڈر پر ہوٹل بھی کھل گئے ہیں ۔ لوگ اب گھروں میں فری لانس کام کر کے کما رہے ہیں ۔  ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم ابھی سے اگلے برسوں کی صورت حال کا اندازہ لگا کر اپنے آپ کو اس کے مطابق ڈھالیں ۔ ماضی میں اخبارات میں خطاط کو بہت اہمیت حاصل تھی لیکن جنہوں نے خود کو نہیں ڈھالا وہ لوگ تباہ ہو گئے ۔ کمپوزر اور اسسٹنٹ کی جگہ گوگل سافٹ ویئر لے رہا ہے ۔ حالات واضح ہیں کہ اگر آپ ملازمت میں مستقبل ڈھونڈ رہے ہیں تو یہ بہت بھیانک غلطی ہے ۔ آپ کو یا تو آن لائن دنیا میں قدم رکھ کر بروقت اس کے طور طریقے سیکھنے ہوں گے ۔ یا پھر اپنا کاروبار شروع کرنا ہو گا اور اسے جدید انداز سے چلانا ہو گا ۔  اگر آپ کے پاس سرمایا کم ہے تو مائیکرو فنانس پارٹرنر شپ کے تحت تین چار دوستوں کو ساتھ ملا کر کوئی چھوٹا سیٹ اپ لگا لیں اور اسے بڑھاتے جائیں ۔ آپ کو جو بھی کام آتا ہے یقین مانیئے آن لائن دنیا میں اس کی ضرورت ہے ، بس آپ کو اس دنیا کے طور طریقے سیکھنے ہیں ، اپنے کام کو نئے انداز مین پیش کرنا ہے اور فری لانسر کے طور پر گھر بیٹھے پیسے کمانے ہیں یا پھر اپنے کاروبار کو پھیلانا ہے ۔ میں نے دو تین ماہ قبل اپنے ایک دوست سے کہا تھا کہ 20 ، 25 ہزار کی ایک ملازمت آئی ہے تم نے کرنی ہے ؟ وہ کہنے لگا اتنے تو میں آن لائن دو چار دن میں کما لیتا ہوں، اتنے پیسوں کے لئے ملازمت کیا کرنی ۔ ایک دوسرے فری لانس دوست سے کہا ایک لاکھ کی فلاں ملازمت تم نے خود کرنے کی بجائے ایک اور دوست کو ریفر کیوں کر دیا؟ کہنے لگا ، وہ مجھے زیادہ سے زیادہ کتنا پے کر دیتے ، ایک نہیں تو ڈیڑھ لاکھ ؟؟؟ اس میں تو نقصان ہے اور اوپر سے سارا دن صبح سے شام تک ان کے دفتر بھی بیٹھنا پڑنا تھا ۔۔۔ یہ دو جوابات آپ  پر واضح کر سکتے ہیں کہ جو لوگ فری لانسر کے طور پر یا آن لائن کما رہے ہیں  وہ اب ملازمت سے دور کیوں بھاگتے ہیں ۔  میرے کچھ دوستوں کو اس بات پر بھی حیرت ہوتی  ہے  کہ  آخر کیسے دن رات ، صبح شام میرے سٹیٹس ، لائیکس ، پوسٹ اور کمنٹ ملتے رہتے ہیں ۔ میں باقی کام کب کرتا ہوں اور ہر وقت یہاں ایکٹیو کیسے رہ پاتا ہوں ۔ کیا آپ کو واقعی لگتا ہے کہ میں سوشل میڈیا یا آن لائن دنیا میں محض  وقت گزاری کے لئے آتا ہوں ؟؟؟ :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *