لاہور ہائی کورٹ کے اپیلٹ ٹریبونل نے کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی کے خلاف تمام اپیلیں مسترد کردیں

kulsoom-3

لاہور: لاہور ہائیکورٹ کے اپیلٹ ٹربیونل نے کلثوم نواز کے این اے 120 کے ضمنی انتخاب کیلئے کاغذات نامزدگی منظور کیخلاف تمام اپیلیں مسترد کر دیں، اپیلوں میں کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کی استدعا کی گئی تھی۔لاہورہائیکورٹ کے جسٹس مامون رشید شیخ اور جسٹس شاہد وحید پر مشتمل دورکنی اپیلٹ ٹربیونل نے پیپلز پارٹی، تحریک انصاف اور عوامی تحریک کی اپیلوں پر سماعت کی جس میں کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے فیصلے کو چیلنج کیا گیا۔ سماعت کے دوران پیپلز پارٹی کے فیصل میر، تحریک انصاف کی یاسمن راشد اور عوامی تحریک کے اشتیاق چودھری سمیت دیگر اپیل کنندگان کے وکلا نے دلائل دیئے اور یہ اعتراض اٹھایا کہ کلثوم نواز نے کاغذات نامزدگی میں اپنی آمدن اور اثاثے ظاہر نہیں کئے، کلثوم نواز نے خود کو نوازشریف کی زیر کفالت ظاہر کیا لیکن وہ خود کئی کمپنیوں میں شئیر ہولڈر ہیں۔ وکلا نے یہ بھی قانونی نکتہ اٹھایا کہ کلثوم نواز نے اقامہ کی بنیاد پر حاصل کردہ تنخواہ کو ظاہر نہیں کیا.جبکہ کلثوم نواز نے کاغذات نامزدگی میں حقائق چھپائے اور حیدرآباد میں ان کے خلاف بغاوت کے الزام میں مقدمہ درج ہے جو میں ظاہر نہیں کیا۔ٹربیونل نے ریمارکس دیئے کہ اگر بیگم کلثوم نواز پر کوئی مقدمہ درج ہے یا وہ عدالتی اشتہاری ہیں تو ٹربیونل کو اس کا تحریری ثبوت دیا جائے، دوران سماعت اپیل کنندگان نے اس سے متعلق کوئی ثبوت پیش نہیں کیے، البتہ اپیل کنندگان کے وکلا نے استدعا کی کہ ریٹرنگ آفیسر نے حقائق کے برعکس کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی منظور کیے ہیں اس لیے کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی مسترد اور ریٹرنگ آفیسر کے فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے۔ لاہور ہائیکورٹ کے اپیلٹ ٹربیونل نے ابتدائی دلائل مکمل ہونے کے بعد ایک ہی نوعیت کی پانچ اپیلیں مسترد کر دیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *