سعودی مفتی اعظم نے اپنی حکومت کے خلاف بڑا بیان دے دیا

saudi-mufti-azam

سعودی مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز بن عبداللہ آل شیخ نے قطر کے عازمین حج کی فضائی راستے منتقلی کے حوالے سے قطری حکام کے منفی موقف کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔عربی روزنامے "الشرق الاوسط" نے پیر کے روز بتایا کہ سعودی مفتی اعظم کے مطابق دوحہ حکومت کا فضائی راستے کے ذریعے اپنے عازمین حج کو سعودی عرب منتقل کرنے سے انکار کرنا یقینا "ایک غلط اور خطرناک حرکت" ہے۔ انہوں نے اپنے تبصرے میں کہا کہ "عازمین حج کو بنا کسی شرعی سبب کے مقامات مقدسہ آنے سے روکنا جائز نہیں"۔سعودی مفتی اعظم کا یہ تبصرہ سعودی فضائی کمپنی "سعودیہ" کے ڈائریکٹر جنرل انجینیر صالح الجاسر کے اس بیان کے چند گھنٹے بعد سامنے آیا ہے جس میں بتایا گیا تھا کہ "قطر نے سعودی عرب کی حج پروازوں کو دوحہ کے ہوائی اڈے پر اترنے کی اجازت نہیں دی جس کے بعد حج پروازوں کو روک دیا گیا ہے"۔دوحہ کے خلاف چار عرب ممالک کے بائیکاٹ کے بعد سے سعودی عرب ، امارات ، بحرین اور مصر کی فضائی کمپنیوں نے قطر کی فضائی حدود میں اپنی پروازوں کا سلسلہ روک دیا جب کہ قطر کی فضائی کمپنی اور وہاں مندرج کمپنیوں پر بھی مذکورہ ممالک کی فضائی حدود میں پروازیں چلانے پر پابندی عائد کر دی گئی۔قبل ازیں شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کی ہدایت اور قطری شاہی خاندان کے رہ نما شیخ عبداللہ آل ثانی کی سفارش کے بعد سعودی عرب کی سرکاری فضائی کمپنی نے اعلان کیا تھا کہ وہ قطر سے عازمین حج کے لیے 7 خصوصی پروازیں چلانے کے لیے تیار ہے۔


Courtesy:https://urdu.alarabiya.net/ur/middle-east/2017/08/21/

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *