جب ایک لڑکی پوپ بن گئی

وحید اسحاق بٹ

waheed ishaq butt

بڑے رازوں میں سے ایک راز یہ ہے کہ ایک بارایک لڑکی بھی پوپ بن چکی ہے،جو باقاعدہ ایک طویل سفرعلمی اور جسمانی مراتب کے مراحل طے کر کے پوپ کے رتبہ پر پہنچی تھی،مگر وہ اس وقت بھی ابھی جوانی میں تھی،اسکا اپنے لڑکی پن کو بہچاننا نچلی سطحوں تو مشکل تھا مگر جوں جوں وہ آگے بڑھتی گیئ اسکا علم و فضل اسکی دھاک بٹھاتا چلا گیا اور اسکا مرایاتی لباس ہی اسکی جنس کو خفیہ رکھنے کا مددگار بن گیا، البتہ پوپ بننے کے بعد اسکی بد بختی ظاہر ہونا شروع ہو گئی۔ ۔گرمی کا موسم تھا، حبشی غلام پنکھا جھلنے میں مصروف،اچانک ایک زوردار جھونکے نےپوپ کے دامن کا پلو آڑایا تو اس کی نظر خمار میں آگئی، پوپ کے سینے پر بڑے بڑے ابھار تھے !! پھر اس کے ہاتھوں میں تیزی آگئی اوراب وہ صرف سینے کو ٹارگٹ کر کے پنکھا اور تیزی سے چلا رہا تھا اتنی تیزی سےجب سینے کا پردہ تھوڑا سا اور سرکا تو شبہ کی ہر گنجائش ختم ہو گئی،اسی اثنا میں پوپ کی آنکھ بھی کھلی اور اپنا ننگا سینہ ا اور سامنے حبشی غلام کی پھٹی آنکھیں دیکھیں تو اسکا ساراپوپ پن موم کی طرح پگھل گیا وہ اپنا راز دبانےکے لئے بازی لگانے پر تل گئی اور ایک کنواری لڑکی کے روپ میں اپنا جسم اس حبشی غلام کے سپرد کر دیا ۔۔۔!!

pop

اس دن کے بعد ان دونوں کے روزانہ کے معمولات بدلنے شروع ہوگئے،پوپ اور حبشی غلام کھانا بھی اکٹھے کھانے لگے، پوپ ازم کی نچلی ایسٹیبلشمنٹ حیران اور شسدر تھی کہ پوپ عمال کو اور زائرین کو وقت کیوں نہیں دیتے اور حبشی غلام ہمہ وقت خدمت میں کیوں رہتا ہے!! اسی دوران ملک بھر میں روم سمیت قحط پڑ گیا، بارش نہ ہونے پر فصلات بھی خراب ہو رہی تھیں، لوگ پوپ سے توقع کر رہے تھے کہ اجتماعی دعا کی کال کریں گے مگر وہ چہرے کی رونمائی سے بھی گریزاں تھے، جب بار بار پوپ کو بلایا گیا اور وہ نہ آیا تو اسٹیبلشمنٹ کے عمال آئے اور انہوں نے خود آ آ کر بتا یا کہ لوگ ناراض ہو رہے ہیں کہ پوپ درشن تک نہیں دیتا کیا بیماری ہے پھر بھی پوپ کی بہانہ بازی چلتی رہے۔ جب 2/3 مہینے گزر گئے اور " پوپ جھروکہ" تک بھی نہ آیا تو ہر طرف چہ میگویئاں ہونے لگیں۔ اہلکاروں نے اطلاع دی مگر پوپ نے تو اہلکاروں کے سامنے آنے سے بھی احتراز شروع کر دیا تھا کیونکہ وہ پوپ اب ایک حاملہعورت ہو چکی تھی اور چھٹا مہینہ چل رہا تھا، کوئی دائی بغیر اہلکاروں کی مدد پوپ کے محل میں داخل نہیں ہو سکتی تھی اور رازدان صرف ایک غلام تھا !! پھر قحط اور بارش نہ ہونے کی خشک سالی سے تنگ لوگوں نےپوپ محل پر حملہ ہی کر دیا اس پہلے کہ لوگ پوپ محل کے اندر گھس کر توڑ پھوڑ کرتے ، کلیسا کے عمال پوپ کو زبردستی کھینچتے ہؤئے بازؤں سے پکڑےہوئے "پوپ جھروکہ" تک لے آئے مگر وہاں تھوڑی جگہ پر ہاتھا پائی کی وجہ پوپ کو ایک دھکہ لگا اور وہ جھروکے سے نیچے جا گرا۔ اور جو کچھ نیچے ہوا وہ عمال اور عوام کے ہجوم کے لیے ناقابل یقین تھا، توہیں آمیز تھا۔ حقارت کا منبع تھا اور عیسایت کے مذہب پر ایک طمانچہ تھا۔ سب لوگ پوپ پل پڑے، پوپ کے اوپر اور اس بد نصیب عورت کو مار دیا اور اسکے پیٹ سے گرا نامکمل بچہ خود ہی اپنی موت مر گیا !! یوں پوپیت کا ایک راز پیدا ہوا، مگر عیسائی دنیا نے اس واقعہ کو گول کر دیا ھوا ہے اور اس کے بعد اب میرا خیال ہے پوپ سے 3 درجے تب سے میڈیکل ٹیسٹ کیا جانا شروع ہو گیا تھا تہ کہ کبھی دوبارہ ایسا کام نہ ہو !! یہیں سے آپ معلوم کر سکتے ہیں کہ عورتوں کی آزادی  کاسبق عیسائیت میں کیا ہے !!!!!

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *