تنظیم مشائخ عظام پاکستان کے زیر اہتمام پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ کی جانب سے نصاب سے اسلامی و تاریخی مضامین نکالے جانے کے خلاف ملک گیر احتجاج

لاہور:تنظیم مشائخ عظام پاکستان کے زیر اہتمام پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ کی جانب سے نصاب سے اسلامی و تاریخی مضامین نکالے جانے کے خلاف ملک گیر احتجاج کا سلسلہ جاری ہے ، مرکزی سیکرٹریٹ پرتنظیم مشائخ عظام پاکستان کے امیر اور چیئرمین لاثانی ویلفیئرفاؤنڈیشن قائدروحانی انقلاب صوفی مسعوداحمدصدیقی کی قیادت میں علماء و مشائخ سمیت سینکڑوں کمیونٹی ورکرز نے نصاب سے دین اسلام ، مشاہیران اسلام ، افواج پاکستان اور تاریخی مضامین کو نکالنے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ، مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے امیر تنظیم مشائخ عظام پاکستان صوفی مسعوداحمد صدیقی نے کہاکہ نصاب سے اسلامی مضامین نکال کر غیرایجنڈے کی تکمیل کی جارہی ہے ۔

ehtjaj

حضورنبی کریم ؐ ، حضرت خدیجہؓ ، مکہ معظمہ اور مدینہ شریف ، حضرت علیؓ ، سمیت دیگر اسلامی مضامین و تصاویر خارج کرنیوالے اسلام اور پاکستان کے خیرخواہ نہیں ہوسکتے ، صاحبزادہ پیر شبیر احمد صدیقی نے کہاکہ ایسی گھناؤنی سازش پر حکومتی خاموشی لمحہ فکر یہ ہے ، پیر سید احمد ندیم شاہ نے کہاکہ اس سازش کا مقصد آنیوالی نسلوں کو غیرملکی ایجنڈے پر کاربند کرنا ہے ، پیر سید عدنان اکرم نے کہاکہ پاکستان کی بنیاد کلمہ حق ہے اور یہاں نصاب بھی اسی بنیاد پر ہوگا، پیر الطاف حسین نے کہاکہ یہ احتجاج اب رکنے والانہیں جب تک حکومت وقت اس سازش پر فوری نوٹس نہ لے، پیر محمد راشد نقشبندی نے کہاکہ ایسی گھناونی سازش کو کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دیں گے پیر افتخار احمد نے کہاکہ نصاب میں تبدیلی کرنے والے عذاب الہٰی کو دعوت دے رہے ہیں ، ایسی گھناونی سازش کرنیوالے غدار عناصر کے خلاف فی الفور کاروائی کی جائے ، نصاب میں تبدیلی کے معاملے پر تنظیم کے زیراہتمام لاہور ، فیصل آباد ، گوجرانوالہ ، سیالکوٹ، نارووال ، اوکاڑہ ، ساہیوال ، گوجرہ، شیخوپورہ ، سرگودھا سمیت دیگر شہروں میں احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوچکا ہے اور جب نصاب میں تبدیلی کا فیصلہ واپس نہیں لیا جاتا مزید شہروں میں احتجاجی مظاہرے کئے جائیں گے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *