موبائل چارجر کے تنازعے پر لڑکی کے ہاتھ کاٹ دیے!

لکھنئو -بھارت میں موبائل فون چارجر کے تنازع پر تلوار بردار شخص نے لڑکی کا ہاتھ کاٹ دیا۔ برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست اترپردیش کی 15 سالہ لڑکی روہت چوراسیا نامی شخص کے بھائی سے موبائل فوج کا چارجر لیا تھا لیکن واپس کرنے سے کر دیا تھا، لڑکی اپنی ماں کے ساتھ مارکیٹ جا رہی تھی کہ 26 سالہ روہت بھی وہاں آ گیا اور دونوں کے درمیان تکرار شروع ہو گئی، اسی دوران روہت نے اچانک تلوار نکالی اور لڑکی پر حملہ کر دیا جس کے نتیجے میں اس کا سیدھا ہاتھ کلائی کے پاس سے کٹ گیا جبکہ اسے جسم کے دیگر حصوں پر بھی گہرے زخم آئے۔

A jilted lover chopped off a 15-year-old schoolgirl's hand with a sword at a busy Indian market in broad daylight

موقع پر موجود افراد نے روہت کو بھاگنے نہیں دیا اور اسے پکڑ کر پولیس کے حوالے کر دیا جبکہ متاثرہ لڑکی کو فوری طور پر اسپتال منتقل کر دیا گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر معاملہ موبائل فون چارجر کا تنازع ہی معلوم ہوتا ہے تاہم وہ دیگر زاویوں سے بھی کیس کی تفتیش کر رہے ہیں۔  متاثرہ لڑکی کے پڑوسیوں کا کہنا ہے کہ وہ کرائے کے گھر میں اپنی نابینا ماں، بیمار والد، دو بڑے بھائیوں اور ایک چھوٹی بہن کے ساتھ رہتی ہے جبکہ حملہ آور لڑکے کے ان سے گھریلو تعلقات تھے :-The attack took place at the Lakhimpur Kheri market, in the northern Indian state of Uttar Pradesh

Vinod Chaurasia, 19, is accused of attacking her and is alleged to have been stalking the girl for past few months

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *