میں شئیرنگ برداشت نہیں کر سکتی

ذوہیب اکرم

aur

عورت کا سب بڑا دشمن یہ جملہ ہوتا ہے جو کسی دوسری عورت ہی کی زبان سے ادا ہوتا ہے

"میں شئیرنگ برداشت نہیں کر سکتی ”

عورت یہ گوارا کرلیتی ہے کہ اس کا مرد شادی کے بغیر باہر جاکر تین جگہ منہ وغیرہ مارکر آجائے  ۔۔ انگلیوں پر گنے جا سکتے ہیں ایسے کیسز جہاں عورت نے اپنے شوہر سے اس بات پر طلاق لے لی ہو کہ وہ باہر جا کر منہ مار آیا ہے ۔۔ لیکن جہاں وہ بات کرتا ہے نکاح جیسے حلال رشتے کی وہاں عورت ہی حلال کی راہ میں سب سے بڑی "حرام پرست" بن کر کھڑی ہوجاتی ہے اس لیے مرد بھی اسی میں خوش  رہتا ہے کہ چل بابا گوشت تو مل رہا ہے نا۔۔ قسائی کی دکان  سے ملے یا پھٹے کے نیچے سے ۔۔ وجہ ؟ وجہ یہ کہ عورت کے سو کالڈ دماغ کو "شئیرنگ "گوارا نہیں ۔۔لول مطلب عورت بھی اب دماغ کی باتیں کرنے لگی، عقل کی بات سوچنے لگی ؟

جبکہ جن تین چار پانچ یا اضافی خواتین کے ساتھ "اس شیئرنگ برداشت نہ کرنے والی عورت "کا شوہر  باہر اپنا منہ اور پہلی بیوی کا نصیب کالا کرکے  آرہا ہوتا ہے ۔۔  اس میں بڑی عمر اور پر گوشت کی تجربہ کار  بھی ہوتی ہیں اور بغیر نتھ اترائی کروائے  بکری کے پائے جیسی کمسن کنیا بھی یعنی عمر بھی کوئی قید نہیں لیکن پہلی بیوی خوش رہتی ہے چلو گھر تو نہیں لارہا نا ۔۔ عورت اور اس کے غیر مرئی دماغ کو کون سمجھائے کہ جن دوسری عورتوں پر وہ گھر سے باہر منہ وغیرہ ماررہا ہے ان کے ساتھ بھی شئیر ہی ہو رہا ہے ۔ انہیں وہ تہجد کے طریقے نہیں سکھاتا یا نوارنی قاعدہ نہیں پڑھاتا

اپنے ہاں کی دیسی عورتوں کی عمر نکل جائے لیکن شادی کے لیے سنگل مرد  ہی چاہئے بھلے سے  بغیر نکاح کے بار بار "کمٹمنٹ” کر چکا ہو تو کیا ہوا شادی کے بعد تو نہیں کررہا نا ۔۔ ابے شادی نے تو لائنس دے دیا اسے اب پکڑا جانا مشکل ہے اس لیے  پہلی بیوی کو  نہیں لگتا کہ وہ کچھ کرتا ہوتا  ہوگا ۔۔ ۔۔ ویسے مرد کا تو کوئی بتا بھی نہیں سکتا کہ وہ کنوارہ ہے یا نہیں ۔۔ مرد تو مرتا بھی کنوارا ہے۔

پر آفرین ہے ان عورتوں پر جن کو دوسری شادی کا نام سنتے  ہی شریعت سجھائی دینے لگتی ہے ۔۔ بندہ ان سے پوچھے جب تیرا شوہر کسی اور کے ساتھ حرام کاری کرکے واپس آیا تو تم نے اس کو سنگسار کیوں نہ کروا دیا ؟؟ یہ بھی تو شریعت ہے ۔۔ اوہ سوری ۔۔ عورت کا لاجک سے کیا تعلق

باقی جہاں تک کنڈیشن کی بات ہے، عدل انصا ف کی بات ہے ۔۔ تو وہ پوری کرنا کون سا مشکل کام ہے ۔۔لیکن کیا عورتیں یہ لکھ کر دینے کو تیار ہیں کہ اگر عدل نامی کنڈینشن پوری کردے مرد تو ہم خوشی سے سوتن قبول کرلیں گی پھر اسٹار پلس کا ناٹک نہیں کھیلا جائے گا

ذرا یہ بات اہنے گھروں میں کر کے دیکھو ۔۔ نہ تمھارے بچوں کو تمھارے خلاف کھڑا کیا اس عورت ذات نے تو دیکھ لینا۔۔

ذاتی طور پر میں چند افراد کو جانتا ہوں جنہوں نے بیویوں کو الگ الگ گھر  اکائونٹ سب کر کے دیا دوسری شادی کے بعد ، پھر بھی چک چک ۔۔ ارے بھائی عورت سے لاجک کا کیا تعلق جذباتی چک چک کروالو ان سے بس سو جس کو کرنی ہے کرلو دوسری شادی یہ شریعت کے چکر میں نہیں پڑو ۔۔ یہ اوور ایج ہوجائے گی پر اس کا دل نہیں کرے گا دوسری بیوی بننے کو یا دوسری کو ایکسپیٹ کرنے کو تو اس کو سنجیدہ نہیں لو تھوڑے دن چوں چوں کرے گی پھر چپ ہوجائے گی-


source:http://www.chawali.pk/latest-news-trends/2nd-woman

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *