گلوبل کرکٹ ٹی 20 لیگ میں کون کون کھیلے گا؟ تفصیلات آگئیں!

Image result for ‫گلوبل کرکٹ ٹی 20‬‎

جنوبی افریقہ کی پہلی گلوبل ٹی ٹوئنٹی لیگ میں کھلاڑیوں کے انتخاب کا مرحلہ مکمل ہوگیا جہاں ڈرافٹنگ میں پاکستان کے آٹھ کھلاڑیوں کو مخلتف ٹیموں نے منتخب کرلیا ہے۔ جنوبی افریقی لیگ کیلئے کھلاڑیوں کے انتخاب کا عمل مکمل ہو گیا ہے جہاں آٹھ ٹیموں نے کُل آٹھ پاکستانی کھلاڑیوں کو اپنے اپنے اسکواڈ کا حصہ بنایا ہے۔

بنگلہ دیش پریمیئر لیگ سے ٹکراؤ کے سبب کئی پاکستانی کھلاڑی ڈرافٹنگ کے عمل کا حصہ نہ بن سکے کیونکہ ان کا پہلے سے ہی بنگلہ دیش لیگ ٹیموں سے معاہدہ ہو چکا ہے۔ مقامی آئکن کھلاڑیوں میں اے بی ڈی ویلیئرز، فاف ڈیو پلیسی، ہاشم آملا، جین پال ڈومینی، عمران طاہر، کگیسو ربادا، کوئنٹن ڈی کوک اور ڈیوڈ ملر شامل ہیں جبکہ ڈیر ملکی آئکن کھلاڑیوں میں کوئی پاکستانی بھی جگہ نہ بنا سکا۔

غیر ملکی آئکن کھلاڑیوں میں ویسٹ انڈیز کے کرس گیل، ڈیوین براوو، کیرون پولارڈ، انگلینڈ کے آئن مورگن، جیسن رائے، کیون پیٹرسن، سری لنکا کے لاستھ ملنگا اور نیوزی لینڈ کے برینڈن میک کولم شامل ہیں۔

پاکستان کے سب سے مہنگے کرکٹر وہاب ریاض ثابت ہوئے جن کی خدمات بینونی زلمی نے ایک لاکھ پندرہ ہزار ڈالر میں حاصل کیں۔ تنازعات میں گھرے عمر اکمل پر بہرحال قسمت مہربان ہو گئی اور بینونی زلمی نے جارح مزاج بلے باز کو ایک لاکھ ڈالر کے عوض اپنی ٹم کا حصہ بنایا جبکہ محمد نواز کی خدمات 35ہزار ڈالر میں حاصل کیں۔

ڈربن قلندرز نے محمد حفیظ کو 75 جبکہ فخرزمان کو 65 ہزار ڈالر کے عوض منتخب کیا ہے۔

نیلسن منڈیلا بے اسٹار فرنچائز نے انورعلی کو ایک لاکھ ڈالر اور جنید خان کو 75ہزار ڈالر میں اسکواڈ کا حصہ بنایا جبکہ عماد وسیم کو اسٹیلن بوش مونارک کی فرنچائز نے ہزار ڈالر اور یاسرشاہ کو جوبرگ جائنٹس نے 60 ہزار ڈالر میں خریدا ہے۔ تاہم کھلاڑیوں کے ناموں کے اعلان کے بعد جنید خان نے جنوبی افریقی لیگ میں کھیلنے سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ وہ پہلے ہی بنگلہ دیش پریمیئر لیگ کی ٹیم کھلنا ٹائٹنز کے ساتھ معاہدے کر چکے ہیں اور جنوبی افریقی لیگ کا حصہ نہیں بن سکیں گے۔

اسی طرح شاہد آفریدی نے بھی بنگلہ دیشی لیگ کی وجہ سے جنوبی افریقی لیگ کا حصہ بننے سے معذرت کر لی۔ گلوبل ٹی ٹوئنٹی لیگ کا پہلا ایڈیشن رواں سال نومبر اور دسمبر میں جنوبی افریقہ کے آٹھ شہروں میں کھیلا جائے گا :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *