بس میں پہلی ملاقات کے 13 برس بعد اسی بس میں شادی!

اوسوالڈو جیمینیز اور کیرا میولنس کی پہلی ملاقات 13 برس پہلے ہوئی تھی اور اب انہوں نے بس میں ہی شادی کی ہے۔ فوٹو: فائل

نیویارک -محبت کی ایک دلچسپ کہانی شروع ہو کر اس وقت شادی تک پہنچی جب 13 سال قبل پہلی ملاقات کرنے والا جوڑا اس اتوار کو رشتہ ازدواج میں بندھ گیا۔

اوسوالڈو جیمینیز اور کیرا میولنس کی پہلی ملاقات 13 برس قبل عوامی ٹرانسپورٹ بس میں ہوئی تھی اور اس کے بعد دونوں کی ملاقات بھی بس میں ہوتی رہی اور اب انہوں نے بس میں ہی شادی کی ہے جس کا دعوت نامہ بس پاس کی طرح ڈیزائن کیا گیا تھا۔

اوسوالڈو جیمینیز ایک آرٹسٹ اور کمپنی کے مالک ہیں۔ اپنی شادی کے موقع پر انہوں نے کہا کہ ہم پہلی بار بس میں ملے تھے اور یہیں ہماری دوستی بڑھی۔ پھر میں نے شادی کی پیشکش کی تو اس نے قبول کر لی جس پر میں نے کہا کہ ہم بس میں ہی شادی کریں گے۔

ان دونوں کی پہلی ملاقات 13 برس پہلے ہوئی تھی اور کیرا میولنس اس وقت غصے میں کسی سے فون پر بات کر رہی تھیں۔ دونوں نے ایک دوسرے کو تھوڑی دیر کے لیے دیکھا تو اوسوالڈو نے دل میں کہا کہ یہی لڑکی ہے جس کے ساتھ زندگی گزاری جا سکتی ہے۔ لیکن خوبصورت اجنبی لڑکی اچانک بس سے اتر کر غائب ہو گئی۔ تاہم خوش قسمتی سے دونوں کی ایک بار پھر ملاقات اسی دن صبح ساڑھے تین بجے ہوئی جہاں لڑکی ایک بار میں ملی اور اس نے اوسوالڈو کو دیکھنے کا اعتراف کیا۔

اوسوالڈو نے دو سال قبل کیرا کو شادی کی پیشکش کی اور شادی طے ہونے کے بعد تقریب میں 80 لوگوں کو شرکت کی دعوت دی گئی۔ اس کے لیے محکمہ ٹرانسپورٹ نے ان کی یہ درخواست قبول کرلی جس میں کچھ اجنبی مسافر بھی شریک ہوئے۔ اس کے بعد دونوں نے ایک دوسرے کو قبول کیا اور ہنی مون کے لیے مصر روانہ ہو گئے ہیں :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *