اظہر علی کا گھٹنا جواب دے گیا

لاہور:23ستمبر تک جاری رہنے والے کیمپ میں صبح دس بجے سے تربیت کا عمل شروع ہوگا، مکی آرتھر کی زیر نگرانی کھلاڑی اپنی خامیوں پر قابو پانے کی کوشش کریں گے ،منتخب اسکواڈ کی 24ستمبر کو سری لنکا روانگی کراچی (طارق حسین) سری لنکا کیخلاف ٹیسٹ سیریز کیلئے قومی کرکٹرز کے تربیتی کیمپ کا آج سے لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں آغاز ہو گیا لیکن بری خبر یہ ہے کہ امتحان سے قبل اظہرعلی کا گھٹنا جواب دے گیا ہے ،سابق ون ڈے کپتان کی پرانی انجری واپس لوٹ آئی،ڈاکٹرز کی توجہ کا مرکزہیں جو آج ان کی تکلیف کا جائزہ لیں گے ،سری لنکا کیخلاف پہلے ٹیسٹ تک صحتیابی کی توقع کی جارہی ہے ،بیٹی کی پیدائش کے بعد فاسٹ بالر محمد عامر ٹریننگ کیلئے لاہور واپس آ گئے ،ستمبر تک جاری رہنے والے کیمپ میں صبح دس بجے سے تربیت کا عمل شروع ہوگا،ہیڈ کوچ مکی آرتھر کی زیر نگرانی اپنی خامیوں پر قابو پانے کی کوشش کریں گے ،منتخب اسکواڈ کی 24ستمبر کو سری لنکا روانگی ہو گی۔ تفصیلات کے مطابق سری لنکا کیخلاف 28ستمبر سے شروع ہونے والی دو ٹیسٹ میچوں پر مشتمل سیریز کی تیاریوں کیلئے قومی کرکٹرز کا تربیتی کیمپ آج سے لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں شروع ہوگا ،23ستمبر تک جاری رہنے والے کیمپ میں آج صبح دس بجے سے تربیت کا عمل شروع ہوگا جہاں ہیڈ کوچ مکی آرتھر کی زیر نگرانی کھلاڑی اپنی خامیوں پر قابو پانے کی کوشش کریں گے جس کے بعد منتخب اسکواڈ کی 24ستمبر کو سری لنکا روانگی شیڈول ہے ۔ کیمپ کے باقاعدہ آغاز سے قبل بری خبر یہ ہے کہ سابق ون ڈے کپتان اور اوپننگ بیٹسمین اظہرعلی کا گھٹنا جواب دے گیا ہے ۔  پی سی بی میڈیا ڈپارٹمنٹ کے آفیشل نے بتایا کہ اظہرعلی کی پرانی انجری واپس لوٹ آئی ہے جس کو ڈاکٹرز نے اپنی نگاہ میں رکھا ہوا ہے اور آج ان کی انجری کا جائزہ لیا جائے گا تاہم امید ہے کہ وہ سری لنکا کیخلاف پہلے ٹیسٹ تک مکمل صحتیاب ہو جائیں گے ۔ان کا کہنا تھا کہ تربیتی کیمپ میں شامل اظہرعلی اگر بروقت صحتیاب نہیں ہو سکے تو پھر ان کی جگہ متبادل کھلاڑی کو اسکواڈ میں شامل کیا جا سکتا ہے ۔دوسری جانب تربیتی کیمپ جوائن کرنے کیلئے فاسٹ بالر محمد عامر بھی وطن واپس پہنچ گئے ہیں جو ان اٹھارہ کھلاڑیوں میں شامل ہیں جن کے ناموں کا گزشتہ دنوں قومی سلیکشن کمیٹی نے اعلان کیا تھا۔ ان میں سے کچھ کھلاڑی پہلے ہی لاہور پہنچ چکے ہیں جبکہ باقی پلیئرز آج کیمپ جوائن کریں گے جو پانچ روز تک جاری رہے گا۔یاد رہے کہ بیٹی کی پیدائش کے سبب محمد عامر نے ورلڈ الیون کیخلاف آزادی کپ میں حصہ نہیں لیا تھا لیکن ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے ان کی کمی کو محسوس کیا اور دوسرے میچ میں ناکامی کے بعد وہ اس بات کا برملا اظہار بھی کر بیٹھے تھے ۔واضح رہے کہ پاکستان اور سری لنکا کے درمیان دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز کا پہلا ٹیسٹ اٹھائیس ستمبر کو ابوظہبی میں شروع ہوگا جبکہ دوسرا ٹیسٹ چھ اکتوبر سے دبئی میں ہوگا جو سری لنکن ٹیم کیلئے اولین ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ بھی ہوگا جسے حریف ٹیم کافی اہمیت دے رہی ہے ۔پاکستان اور سری لنکا کے درمیان پانچ میچوں کی ایک روزہ سیریز دبئی، ابو ظہبی اور شارجہ میں کھیلی جائے گی جس کا آغاز تیرہ اکتوبر سے ہو گا۔ پی سی بی کو امید ہے کہ اس کے بعد ہونے والی ٹی ٹوئنٹی میچوں کی سیریز کا تیسرا معرکہ لاہور میں انتیس اکتوبرکو ہو گا جس کیلئے تیاری بھرپور انداز میں کی جائے گی اور حال ہی میں ورلڈ الیون کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز جس شاندار انداز سے ختم ہوئی ایسے ہی بھرپور انداز میں اسے بھی منعقد کیا جائے گا۔ دو ہزار نو میں لاہور میں دہشت گردوں کے حملے سے متاثرہ سری لنکن ٹیم پہلی بار پاکستان میں کوئی میچ کھیلے گی جسے پی سی بی حکام انتہائی اہمیت کا حامل سمجھ رہے ہیں کیونکہ اس کے بعد امید ہے کہ مزید انٹرنیشنل ٹیمیں پاکستان کا رخ کریں گی۔ پی سی بی نے ورلڈ الیون کی سیریز سے قبل پی ایس ایل کا فائنل بھی لاہور میں کرایا تھا اور بورڈ کے حکام پر امید ہیں کہ سری لنکا کیخلاف ایک ٹی ٹوئنٹی میچ کے بعد ویسٹ انڈیز کی ٹیم بھی پاکستان کا دورہ کرے گی جس سے دیگر بڑی ٹیموں پر بھی پاکستان آنے کیلئے دباؤ پڑے گا۔ حال ہی میں چیمپئنز ٹرافی جیتنے کے بعد پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی واپسی کے امکانات روشن ہوئے ہیں ورنہ اس سے قبل دنیائے کرکٹ گرین شرٹس کو سنجیدگی سے نہیں لے رہی تھی لیکن اب ماضی کے برعکس حالات میں نمایاں تبدیلی آئی ہے ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *