13 سالہ لڑکی نے ایسا کیا کردیا کہ باپ نے سفاکیت کی انتہا کردی!

حیدر آ باد -بھارت کی جنوبی ریاست تیلنگانا میں سفاک باپ نے اپنی ہی 13سالہ بیٹی کو لڑکوں کے ساتھ دوستی رکھنے اور بات کرنے پر دیوار میں سر مار کر قتل کر دیا،ریاست میں یہ پہلا واقعہ ہے کہ غیرت کے نام پر قتل ہونے والی کم عمر ہے۔ جبکہ قتل کرنے کے بعد والدین نے نعش کو جلا کر خودکشی کا ڈرامہ رچایا۔
بھارتی ٹی وی” این ڈی ٹی وی “ کی رپورٹ کے مطابق پولیس حکام کا کہنا ہے کہ جب کسی فرد کو آگ لگتی ہے تو یہ فطری عمل ہے کہ وہ بھاگتا ہے جس سے آس پاس کی چیزیں بھی آگ کی لپیٹ میں آ سکتی ہیں، لیکن رخسانہ کا جسم آ دھا جلا ہوا تھا، ہمیں شک ہوا کہ پہلے قتل کیا گیا ہے بعد میں جلایا گیا ہے۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں واضح ہو گیا کہ رخسانہ کو قتل کیا گیا ہے، تحقیقات میں لڑکی کے باپ نے قتل کا اعتراف کر لیا ہے۔ پولیس کے مطابق لڑکی کے باپ نے اسے سکول کے لڑکے ساتھ بات کرتے ہوئے دیکھا تو گھر آکر اس پر چلانے لگا اور پھر دیوار کے ساتھ سر مار مار کر قتل کر دیا۔ رخسانہ کے والدین نے پولیس کو خودکشی کا بہانہ سنا دیا لیکن تحقیقات کے بعد دونوں ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا۔ رخسانہ ساتویں جماعت کی طالبہ تھی، جبکہ زہین اور سمجھدار بھی تھی، اس گانے کا شوق بھی تھا :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *