روس نے فیس بک کو دھمکی لگادی!

ماسکو-روس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ’فیس بک ‘ کو خبر دار کیاہے کہ اگر مقامی صارفین کے ڈیٹا کو محفوظ کرنے کے قانون پر عمل نہیں کیا تو 2018میں اس پر پابندی لگا دی جائے گی ۔
تفصیلات کے مطابق روس کے انٹرنیٹ واچ ڈاگ نے سماجی رابطے کی معروف ویب سائٹ ’فیس بک‘کو خبردار کیا ہے کہ اگر اس نے مقامی صارفین کے ڈیٹا کو محفوظ کرنے کے قانون پر عمل نہیں کیا تو 2018 میں اس پر پابندی لگادی جائے گی۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ’اے ایف پی‘ نے انٹرفیکس نیوز ایجنسی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ روسکومنازور ٹیلی کامز واچ ڈاگ کے سربراہ الیگزینڈر زاروف نے ماسکو میں صحافیوں کو بتایا کہ ’اس قانون پر عمل کرنا سب کے لیے لازمی ہے۔الیگزینڈر زاروف نے کہا کہ ہم فیس بک کو اس قانون پر عملدرآمد کرانے کے لیے کام کریں گے، اور یہ ہر صورت میں 2018 میں ہوجائے گا۔
روس میں یہ متنازع قانون 2014 میں منظور کیا گیا تھا، جس میں غیر ملکی میسیجنگ سروسز، سرچ انجنز اور سوشل نیٹ ورکنگ سائٹس کو اس بات کا پابند بنایا گیا تھا کہ وہ روس میں روسی صارفین کا ذاتی ڈیٹا محفوظ کریں گی۔اس قانون کا مقصد، جس کی ٹیلی کمیونیکیشن انڈسٹری کی جانب سے سختی سے مخالفت کی گئی، بظاہر فیس بک اور ٹویٹر جیسی سماجی رابطوں کی ویب سائٹس کو صارفین کی معلومات سے متعلق دباو¿ میں لانا تھا۔
الیگزینڈر زاروف کا کہنا تھا کہ ’کسی بھی صورت میں یا تو ہم قانون پر عملدرآمد کرائیں گے یا پھر کمپنی کو روس میں اپنا کام روکنا ہوگا، جیسا کہ بدقسمتی سے لِنکڈ اِن کے ساتھ ہوا اور کوئی اس سے مستثنیٰ نہیں ہوگا :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *