یاہو کے 3 ارب ای میل اکاؤنٹس ہیک ہونے کا انکشاف!

— شٹر اسٹاک فوٹو

یاہو ایک زمانے میں مقبول ترین ای میل سروس تھی اور گزشتہ سال دسمبر میں اس نے اعتراف کیا تھا کہ 2013 میں ایک ارب اکاﺅنٹس کو ہیک کرلیا گیا تھا جس کی مثال موجودہ تاریخ میں نہیں ملتی۔ مگر اب انکشاف ہوا کہ درحقیقت یہ تعداد ایک ارب نہیں بلکہ اس سے کہیں زیادہ ہے اور درحقیقت یاہو کے تمام اکاﺅنٹس کو 2013 میں ہیک کرلیا گیا تھا۔ یہ اعتراف یاہو کی جانب سے منگل کو کیا گیا۔

اس سے پہلے گزشتہ سال ستمبر میں پہلے اس کمپنی نے بتایا کہ 50 کروڑ اکاﺅنٹس کی اہم معلومات صارفین چوری کرلی گئی ہے مگر پھر دسمبر میں اعتراف کیا کہ یہ تعداد ایک ارب ہے۔ مگر اب کمپنی نے انکشاف کیا کہ درحقیقت اس ای میل سروس استعمال کرنے والے تمام تین ارب اکاﺅنٹس تک ہیکرز نے رسائی حاصل کرلی تھی۔

انسانی تاریخ میں ہیکنگ کے اس طرح کے واقعے کی کوئی مچال موجود نہیں اور تین ارب کی تعداد فیس بک، انسٹاگرام اور ٹوئٹر کے مجموعی صارفین سے کہیں زیادہ ہے۔چگزشتہ سال اس واقعے کے اعتراف کے بعد تحقیقات کی گئی تھی اور اب اس کے نتائج سے معلوم ہوا کہ تمام یاہو اکاﺅنٹس اگست 2013 میں ہیکنگ کے اس واقعے سے متاثر ہوئے۔

کمپنی نے گزشتہ سال تمام صارفین کو ای میل نوٹیفکیشن بھیج کر کہا تھا کہ وہ فوری طور پر اکاﺅنٹ کے پاس ورڈ کو تبدیل کردیں اور اکاﺅنٹس تک رسائی کے سیکیورٹی سوالات کو بلاک کردیں۔ یاہو اب تک ہیکنگ کرنے والوں کو شناخت نہیں کرسکی ہے اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ مل کر انہیں تلاش کرنے کی کوشش کررہی ہے۔

یاد رہے کہ یاہو کو معروف کمپنی ویریزون نے رواں سال جون میں 4.48 ارب ڈالرز کے عوض خرید لیا تھا، تاہم پہلے یہ رقم 4.83 ارب ڈالرز تھی جو ہیکنگ کے انکشاف کے بعد کم ہوگئی، اب نئے انکشاف کے بعد مزید کمی کا امکان ہے۔

اگر آپ بھی یاہو ای میل سروس استعمال کرتے ہیں یا کرتے رہے ہیں تو فوری طور پر کچھ اقدامات ضرورت کرلیں، یعنی دیگر سروسز کے لاگ ان کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے ان کے پاس ورڈ بدل لیں اور ان کے لیے یاہو اکاﺅنٹ کو پرائمری سے ہٹا دیں۔ یہ کہنے کی ضرورت نہیں کہ آپ کو ہر ویب سائٹ کے لیے الگ اور مضبوط پاس ورڈ استعمال کرنا چاہئے، تاکہ اگر کوئی سروس ہیک بھی ہوجائے تو دیگر اکاﺅنٹس متاثر نہ ہو۔

اسی طرح اگر آپ کا فلیکر پیج ہے جس کو استعمال نہیں کرتے، ٹمبلر اکاﺅنٹ کو نہیں دیکھا، یاہو اکاﺅنٹ کو بہت کم استعمال کررہے ہیں تو اب وقت ہے کہ انہیں ہمیشہ کے لیے ڈیلیٹ کردیں۔

سب سے پہلے تو پرانی ای میلز اور فوٹوز کے ڈیٹا کا بیک اپ بنائیں جس کے لیے آپ اس لنک پر جاسکتے ہیں۔ اسی طرح اکاؤنٹ ڈیلیٹ کرنے کے لیے اس لنک پر جاسکتے ہیں، ایک بار جب آپ اکاؤنٹ ڈیلیٹ کردیں گے تو تین ماہ تک یہ عمل پورا ہوگا تاکہ اگر آپ کا ارادہ بدلے تو اکاؤنٹ کو بچایا جاسکے :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *