آئی بی سے منسوب خط جعلی قرار

وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ آئی بی سے منسوب خط جعلی تھا جس کے ذریعے پارلیمنٹ ہاؤس اور ارکان کا وقار مجروح ہوا۔
قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران انٹیلی جنس بیورو کے مبینہ جعلی خط کے معاملے پر وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے خطاب ہوئے کہا کہ ایک ٹی وی چینل پر کالعدم تنظیموں سے ارکان اسمبلی کے تعلق کی دستاویز لہرائی گئی، اس کی کاپیاں بانٹی گئیں اور کہا گیا کہ وزیراعظم ہاؤس نے انٹیلی جنس بیورو سے رپورٹ مانگی اور آئی بی نے سینتیس ارکان کی فہرست بنا کر دی۔
وزیراعظم نے کہا کہ نجی ٹی وی دکھائی جانے والی دستاویز جعلی ہے اور اس کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں۔خط کے معاملے پر آئی بی نے بھی بیان جاری کیا ہے کہ وہ خط جعلی ہے۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ آئی بی سے منسوب خط جعلی تھا جس کے ذریعے پارلیمنٹ ہاؤس اور ارکان کا وقار مجروح ہوا۔
قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران انٹیلی جنس بیورو کے مبینہ جعلی خط کے معاملے پر وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے خطاب ہوئے کہا کہ ایک ٹی وی چینل پر کالعدم تنظیموں سے ارکان اسمبلی کے تعلق کی دستاویز لہرائی گئی، اس کی کاپیاں بانٹی گئیں اور کہا گیا کہ وزیراعظم ہاؤس نے انٹیلی جنس بیورو سے رپورٹ مانگی اور آئی بی نے سینتیس ارکان کی فہرست بنا کر دی۔
وزیراعظم نے کہا کہ نجی ٹی وی دکھائی جانے والی دستاویز جعلی ہے اور اس کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں۔خط کے معاملے پر آئی بی نے بھی بیان جاری کیا ہے کہ وہ خط جعلی ہے۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ ہاؤس اور ارکان کا وقار مجروح ہوا ہے، خط لوگوں کو بدنام کرنے کے لیے جاری کیا گیا لہذ اس معاملے پر آئی بی نے تحقیقات شروع کردی ہیں۔
گزشتہ دنوں نجی ٹی وی چینل پر انٹیلی جنس بیورو(آئی بی) کا مبینہ خط سامنے آیا تھا جس میں بعض ارکان پارلیمنٹ کے کالعدم تنظیموں سے رابطوں کا انکشاف کیا گیا تھا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ ہاؤس اور ارکان کا وقار مجروح ہوا ہے، خط لوگوں کو بدنام کرنے کے لیے جاری کیا گیا لہذ اس معاملے پر آئی بی نے تحقیقات شروع کردی ہیں۔
گزشتہ دنوں نجی ٹی وی چینل پر انٹیلی جنس بیورو(آئی بی) کا مبینہ خط سامنے آیا تھا جس میں بعض ارکان پارلیمنٹ کے کالعدم تنظیموں سے رابطوں کا انکشاف کیا گیا تھا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *