بھارت نے پاکستان کو بائی پاس کر کے ایران کے راستے افغانستان سے تجارت شروع کر دی

اتوار کے روز بھارت نے پہلی شپنگindia n afghanistan کنسائنمنٹ چاہ بہار بندگاہ کے ذریعے افغانستان بھیج دی۔ یہ کنسائنمنٹ انڈیا کی طرف سے افغانستان کو تحفہ کے طور پر مغربی بندرگاہ کندلا سے بھیجی گئی ۔ اب یہ ٹرکوں کے ذریعے ایران سے افغانستان پہنچائی جائے گی۔ اگست میں نئی افغان پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے بھارت کو افغانستان میں امن بحال کرنے میں مدد کرنے پر ابھارا تھا۔ فی الحال پاکستان بھارت کو اپنے ملک سے تجارت کی اجازت نہ دینے پر مصر ہے جس کی وجہ پاک بھارت تعلقات کی تلخی ہے ۔ اتوار کے دن بھارتی وزیر خارجہ سوشما سوراج نے کہا کہ یہ شپمنٹ بھارت افغانستان اور ایران کی بڑھتی ہوئی دوستی  اور تجارت کے فروغ کے لیے مشترکہ کوششوں کی ایک بڑی علامت ہے۔ پچھلے سال بھارت افغانستان اور ایران نے ملک کر ایک ٹریڈ روٹ بنانے کا فیصلہ کیا تھا جس کے ذریعے سامان کی ترسیل وسطی ایشیا تک بذریعہ سٹرک ممکن بنائی جائے گی۔ اس مقصد کےلیے ایران میں چاہ بہار بندرگاہ کی تعمیر کا فیصلہ کیا گیا جس کےلیے بھارت نے 500 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کااعلان کیا تھا۔  

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *