جناح شام کو خالی جیب اپنے گھر لوٹ جاتے۔۔۔!

rati 2ترجمعہ : جہاں آراء سید
قسط نمبر:11
فراغت کے ان چند ماہ کے دوران محمد علی جناح نے اپنے کئی پوشیدہ جوہر دریافت کئیے تاہم احساسِ ذمہ داری ان میں ابتداء ہی سے موجود تھا۔اس دوران ان کی ایک اور صلاحیت سامنے آئی کہ وہ اداکاری بھی کر سکتے تھے۔اس صلاحیت کا احساس اُنہیں غالباََ اُسوقت ہوا جب اُنہوں نے کورٹ روم میں بولنے کی پریکٹس کرنے کی خاطر ایک ’’ریڈنگ سرکل‘‘ جوائن کیا۔جب وہ با آوازِ بلند کچھ پڑھتے تو اُن کا لب و لہجہ اس قدر متاثر کن محسوس ہوتا تھا کہ دوست ان سے تھیٹر کے لئے آڈیشن دینے کے لئے اصرار کرنے لگے۔مطالعے نے انہیں اتنا حوصلہ بخشاتھا کہ وہ اپنے بارے میں فیصلے کرنے کے قابل ہو گئے تھے۔لہٰذا جوں ہی انہیں تھیٹر میں ایک رول ملا، انہوں نے بلا جھجھک اسے سائن کر دیا۔
جناح1986میں جب اپنی قانون کی ڈگری حاصل کرنے کے بعدلندن سے انڈیا پہنچے تو بالکل بدل چکے تھے۔اس وقت وہ بہترین کوالٹی اور بہترین تراش خراش کے سوٹ میں ملبوس تھے جسے اُنہوں نے بڑی احتیاط سے منتخب کیا تھا۔اپنے تمام پرانے کپڑے اُنہوں نے ترک کر دئیے تھے۔اب وہ شب خوابی کے لباس کے طور پر سلک کا کوٹ اور اس پر انگریزوں کی مانند ڈریسنگ گاؤن بھی پہنتے تھے۔انہوں نے ایک مونوکل بھی خریدا تھاجسے وہ اسوقت کے فیشن کے مطابق بوقتِ ضرورت ایک آنکھ پر لگایا کرتے تھے تاہم ان ظاہری تبدیلیوں کے مقابلے میں محمد علی جناح کی شخصیت میں جو باطنی تبدیلیاں واقع ہوئی تھیں اُنہی ہر ایک نے متاثر کیا تھا۔
قائدِ اعظم محمد علی جناح کی شخصیت میں آنیوالی ظاہری اور باطنی دونوں طرح کی تبدیلیاں اُن کے پروفیشن کے اعتبار سے ان کے لئے مددگار ثابت ہوئیں۔ایک ایسے شعبے میں جہاں ایک بیرسٹر کو صحیح موقع کا انتظار کرنے اور کامیابی کی سیڑھی تک پہنچنے میں سالوں لگ جاتے تھے، جناح نے دو سال سے بھی کم وقت میں یہ منزلیں طے کر لیں۔وہ اپنے انداز سے کام کرنے کے عادی تھی، ان کے پاس بالکل بھی کوئی کام نہیں ہوتا تھاتب بھی وہ کسی سے اس سلسلے میں مدد مانگنا پسند نہیں کرتے تھے۔ان کی شخصیت میں ایسی کشش تھی کہ اُنہیں نظر انداز کرنا آسان نہ تھا۔اس پر ان کا رکھ رکھاؤ بھی سب کو متاثر کرتا تھا۔وہ عدالت کی راہداریوں میں تمکنت کے ساتھ گھومتے دکھائی دیتے، بلا ضرورت کسی سے مخاطب نہ ہوتے اور پھر شام کو خالی جیب لئے چپ چاپ اپنے سستے سے ۃوٹل کے کمرے میں لوٹ آتے۔ (جاری ہے)

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *