بنگلا دیش کے چیف جسٹس کرپشن الزامات پر مستعفی

کرپشن کے الزامات کا سامنا کرنے والے بنگلا دیشی سپریم کورٹ کے چیف جسٹس سریندر کمار سنہا نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔
جسٹس سریندر کمار سنہا نے چھٹیوں پر جانے کے 6 ہفتے بعد عہدے سے مستعفی ہوگئے۔
جسٹس سریندر کمار بنگلا دیش کی سپریم کورٹ کے اس اپیلٹ بینچ کی سربراہی کر رہے تھے جس نے پارلیمنٹ کے یہ اختیارات ختم کر دیے تھے کہ یہ قانون ساز ادارہ ملک کی اعلیٰ ترین عدلیہ کے ارکان کو ان کے عہدوں سے ہٹا سکتا ہے۔اس فیصلے کے بعد سے جسٹس سریندر کمار کو حکومت کی جانب سے شدید تنقید کا سامنا تھا اور وہ گزشتہ ماہ ایک ماہ کی رخصت پر بیرون ملک چلے گئے تھے۔
بنگلا دیش میں حکومت مخالف حلقوں کا کہنا تھا کہ جسٹس سریندر کمار کو حکومت نے ایک ماہ کی جبری رخصت پر بھیجا۔بیرون ملک رخصت پر جانے کے ایک روز بعد جسٹس سریندر کمار نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ بیمار نہیں ہوں اور فیصلے کے حوالے سے کی جانے والی تنقید سے بہت دل دکھا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ میں ملک سے بھاگ نہیں رہا، واپس ضرور آؤں گا۔
دوسری جانب سپریم کورٹ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ جسٹس سنہا پر کرپشن اور منی لانڈرنگ سمیت 11 مقدمات قائم ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *