روسی میزائلوں کو امریکی دفاعی نظام بھی نہیں روک سکے گا ، پیوٹن کا دعویٰ

ماسکو۔ روسی صدر ولادی میر پیوٹن نے انتہائی تباہ کن ایٹمی ہتھیار تیار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے روسی صدر ولادی میر پیوٹن کا کہنا تھا کہ روس نے انتہائی تباہ کن ایٹمی ہتھیار تیار کرلیے ہیں اور یہ جدید ترین ایٹمی میزائل دنیا میں کہیں بھی استعمال کیے جاسکتے ہیں جب کہ ان میزائلوں کو امریکی دفاعی نظام بھی نہیں روک سکے گا۔ روسی صدر نے اپنے خطاب کے دوران ایٹمی ہتھیاروں کی ویڈیوز دکھاتے ہوئے کہا کہ اب امریکا روس کو سیکیورٹی اعتبار سے کم تر سمجھنا بند کرے اور برابری کی سطح پر بات کرے۔ روسی صدر نے پارلیمنٹ سے خطاب کے دوران کہا ہے کہ روس نے آبدوز سے چھوڑے جانے والے ڈرون بھی تیار کرلیے ہیں جو ایٹمی حملے کی بھر پور صلاحیت رکھتے ہیں جب کہ ہائپرسونک میزائل سسٹم اپنی آواز سے 20 گنا زیادہ تیزی کے ساتھ ہدف کو نشانا بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ دوسری جانب روسی صدر کے بیان پر امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان نے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ولادی میر پوٹن کا بیان اس بات کی تصدیق ہے جس کے بارے میں امریکا گزشتہ کئی سالوں سے جانتا ہے۔ امریکا نے روس کے اس اقدام کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ امریکا اس عمل کو ناپسند کرتا ہے۔ وائٹ ہاؤس کی ترجمان سارہ سینڈرز نے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ امریکا بھی اپنے دفاعی اخراجات میں اضافہ کریگا تاکہ اس کی دفاعی صلاحیت میں بھی اضافہ ہو:۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *