ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس ، ایف آئی اے کے جج کے خلاف کرپشن کی تحقیقات

بدنام زمانہ ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس میں رشوت لے کر شعیب شیخ کو بری کرنے والے برطرف ایڈیشنل سیشن جج پرویز عبدالقادر کے خلاف تحقیقات شروع کردی گئیں۔ ذرائع کے مطابق ایف آئی اے نے رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کو خط لکھ کر برطرف جج پرویز القادر میمن کے خلاف ہونے والی انکوائری رپورٹ مانگ لی ہے۔ اس کے علاوہ پرویز القادر میمن کے 50 لاکھ روپے رشوت لینے کا اعترافی بیان اور ان کے خلاف شکایت کا ریکارڈ بھی طلب کیا گیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ابتدائی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ایڈیشنل سیشن جج کو رشوت کی رقم کے لیے ایک اہم شخصیت نے مڈل مین کا کردار ادا کیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق ایڈیشنل سیشن جج پرویز عبدالقادر میمن کو مقدمے کے اندراج سے قبل شامل تفتیش کیا جائے گا اور رشوت دے کر بریت حاصل کرنے والے شعیب شیخ اور مڈل مین کا نام مقدمے میں شامل کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ پرویز عبدالقادر میمن نے کمیٹی کے سامنے 50 لاکھ روپے رشوت لےکر شعیب شیخ کو بری کرنے کا اعتراف کیا تھا، جس پر اسلام آباد ہائی کورٹ کے رجسٹرار نے برطرف جج کے خلاف مقدمے کے لیے ایف آئی اے کو خط لکھا تھا:۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *