عدالت نے راؤ انوار کی رہائی کے احکامات پردستخط کردیئے

کراچی کی انسداد دہشتگردی عدالت نے سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کے رہائی کے احکامات پردستخط کردیئے ہیں،ذرائع کے مطابق جیل حکام کو دونوں مقدمات میں رہائی کا حکم نامہ آج ہی بھیجا جائے گا جس کے بعد رائو انوار کی رہائی کسی وقت بھی عمل میں لائی جا سکے گی۔ راؤانوارکی ایک مقدمے میں 10 جولائی اوردوسرے مقدمے میں 20 جولائی کوضمانت منظور ہوئی تھی ،نقیب اللہ قتل کیس سمیت راؤ انوار پر دو مقدمات درج ہیں۔ سابق ایس ایس پی ملیرراؤ انوارکیخلاف غیرقانونی اسلحہ اوردھماکاخیزمواد رکھنےسے متعلق کیس میں انسداد دہشتگردی عدالت نے راؤ انوار کی ضمانت منظور کرلی ۔یاد رہے سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار پر الزام ہے کہ انہوں نے رواں برس 13 جنوری کو ماورائے عدالت جعلی پولیس مقابلے میں قبائلی نوجوان نقیب اللہ محسود سمیت پانچ افراد کو قتل کیا تھا۔ اس مقابلے پر سپریم کورٹ نے ازخود نوٹس لیا تھا جب کہ واقعے کی دو مختلف ایف آئی آرز شاہ لطیف تھانے میں سرکار کی مدعیت میں درج کی گئی تھیں۔ پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے اس معاملے پر آواز اٹھائی اور وزیر داخلہ سندھ کو انکوائری کا حکم دیا۔تحقیقاتی کمیٹی کی جانب سے ابتدائی رپورٹ میں راؤ انوار کو معطل کرنے کی سفارش کے بعد انہیں عہدے سے ہٹا کر نام ای سی ایل میں شامل کردیا گیاتھا جبکہ چیف جسٹس آف پاکستان کی جانب سے اس معاملے پر از خود نوٹس لیا گیا تھا۔ ملزم راؤ انوار کچھ عرصے تک روپوش رہے تاہم 21 مارچ کو وہ اچانک سپریم کورٹ میں پیش ہوگئے جہاں عدالت نے انہیں گرفتار کرنے کا حکم دیا۔ سابق ایس ایس پی ملیرراؤ انوارکیخلاف غیرقانونی اسلحہ اوردھماکاخیزمواد رکھنےسے متعلق کیس میں انسداد دہشتگردی عدالت نے راؤ انوار کی ضمانت منظور کرلی ۔ راؤ انوار کی اس سے قبل بھی عدالت نے ضمانت منظور کی تھی اور 10 لاکھ روپے زرضمانت کے مچلکے جمع کرانے کاحکم دیا لیکن غیر قانونی اسلحہ اور دھماکا خیز مواد رکھنے کے مقدمے میں ضمانت نہ ہونے کے باعث انہیں رہائی نہیں مل سکی تھی :۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *