غریب بچوں کے دماغ چھوٹے، امیروں کے بڑے ہوتے ہیں: ماہرین

 brainایک نئی تحقیق نے،جو یہ ثابت کرتی ہے کہ غریب بچوں کے دماغ امیر بچوں کے دماغوں کی نسبت چھوٹے ہوتے ہیں، امریکہ بھر میں جاری اس قومی بحث کو مزید عام کر دیا ہے کہ غربت اور امارت میں موجود بے پناہ فرق کو کم کرنا وقت کی اہم ترین ضرورت ہے۔
ماہرین علم الذہن، جنہوں نے امریکہ بھر میں 3سے 20سال تک کے تقریباً1100بچوں اور بالغ نوجوانوں کے ذہنی خاکوں کا مطالعہ کیا ہے، نے پتہ چلایا ہے کہ سیری برل کارٹیکس کی سطح کا علاقہ خاندانی آمدن سے جڑا ہوتا ہے۔ انہوں نے دریافت کیا کہ وہ خاندان جو 25000ڈالر سالانہ سے کم کماتے ہیں، ان کے بچوں کے دماغوں کی سطوح کے علاقے ان بچوں کے دماغوں کی سطوح کے علاقوں سے6فیصد چھوٹے ہوتے ہیں جو150,000ڈالر یا اس سے زیادہ سالانہ کماتے ہیں۔
مزید یہ کہ غریب بچوں نے سمجھ بوجھ کی آزمائشوں کی ایک بڑی تعداد میں اوسط سے بھی کم کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *