جھوٹی خبر: لاہور اورنج لائن دنیا کا مہنگا ترین میگا ٹرانزٹ منصوبہ بن گیا

کراچی: پاکستان میں 26 اگست کو ایک ویب سائٹ پر شائع ہونے والی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا کہ اورنج لائن منصوبہ دنیا کا سب سے مہنگا ترین میگا ٹرانزٹ منصوبہ بن گیا ہےکیونکہ 27 کلومیٹر پر پھیلے ہوئے اس ٹرین منصوبے پر ایک ارب 65 کروڑ سے زائد لاگت آئی ہے۔

لیکن درحقیقت کیا اورنج لائن منصوبہ دنیا کا سب سے مہنگا ترقیاتی منصوبہ ہے؟ فرانسیسی خبررساں ادارے نے اسے دعوے کو سراسر بے بنیاد قرار دیا ہے۔

امریکا کے ترقیاتی منصوبوں کا جائزہ لینے والے ادارے ریجنل پلان ایسوسی ایشن کے مطابق نیویارک شہر کے سیکنڈ ایونیو کے سب وے پر اس سے کہیں زیادہ لاگت آئی جو پانچ ارب ستاون کروڑ ڈالر ہے۔

سب وے کے صرف پہلے 5 کلومیٹر کے حصے کی تعمیر پر 8 سال لگے اور ٹریک کے ہر میل پر صرف تعمیراتی لاگت 807 ملین ڈالر آئی۔

یورپین جرنل آف ٹرانسپوٹ اینڈ انفراسٹکچر ریسرچ کے مطابق دنیا کے دوسرے بڑے شہروں میں بھی ماس ٹرانزٹ منصوبوں پر فی کلومیٹر لاگت اس سے بڑھ کر آئی۔

یونان کے شہر ایتھنز کی میٹرو کی تعمیر پر فی کلو میٹر لاگت 156 ملین ڈالر، مصر کے شہر قاہرہ 109 ملین ڈالر اور جرمنی کے شہر فرینکفرٹ میں 108 ملین ڈالر تھی۔

پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے مطابق اورنج لائن منصوبے کی فی کلومیٹر لاگت 54 ملین کے لگ بھگ ہے جب کہ پورے منصوبے پر زیادہ سے زیادہ ایک ارب 50کروڑ لاگت آنی ہے۔

اس سے قبل انگریزی اخبار نے اورنج لائن منصوبے کو لاگت کے اعتبار سے اسے غیر معمولی قرار دیا تھا جسے ویب سائٹ پر بڑھا چڑھا کر پیش کیا گیا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *