پولیس مقابلے کے دوران پستول جام ہونے پر اہلکار کی منہ سے 'ٹھائیں، ٹھائیں'

میروت: پولیس مقابلوں کے دوران ملزمان کی ہلاکت یا گرفتاریوں کی خبریں تو ہم اور آپ روز ہی سنتے اور پڑھتے ہیں، لیکن آج ہم آپ کو ایک ایسے مقابلے کے بارے میں بتا رہے ہیں جہاں پولیس اہلکار نے منہ سے ‘ٹھائیں ٹھائیں’کی آوازیں نکال کر ہی خطرناک ملزم کو پکڑ لیا۔

ٹائمز آف انڈیا کی ایک رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ حال ہی میں بھارتی ریاست اتر پردیش میں ایک پولیس مقابلے کے دوران پیش ہوا۔

ہوا کچھ یوں کہ جمعے کی رات ضلع سمبھال کے علاقے اسمولی میں پولیس چیک پوائنٹ پر 2 موٹرسائیکل سوار نوجوانوں کو رکنے کا اشارہ کیا گیا، تاہم انہوں نے پولیس پر فائرنگ کردی اور جائے وقوع سے فرار ہونے کی کوشش کی، اس موقع پر پولیس کی جوابی کارروائی میں رخساد نامی ایک ملزم پکڑا گیا، جس کے سر پر 25 ہزار روپے انعام مقرر تھا۔

رخساد کے ساتھی نے اندھیرے کا فائدہ اٹھاکر بھاگنا چاہا، جس کے لیے کومبنگ آپریشن شروع ہوا۔

پولیس کے سب انسپکٹر منوج کمار گنے کے کھیتوں میں چھپے ملزم کی تلاش میں تھے کہ اچانک ان کی پستول جام ہوگئی، لیکن سب انسپکٹر نے گھبرانے کے بجائے دیسی طریقہ اپنایا اور منہ سے ہی ‘ٹھائیں ٹھائیں’ کی آوازیں نکالیں، تاکہ ملزم کو خوفزدہ کرکے گرفتاری پر مجبور کیا جاسکے۔

اس واقعے کی 13 سیکنڈز پر مشتمل ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر گردش کر رہی ہے، جس نے دیکھنے والوں کو حیران کر رکھا ہے۔

ویڈیو میں سب انسپکٹر منوج کمار کو بولتے سنا جاسکتا ہے، 'مارو مارو، گھیرو، گھیرو، ٹھائیں، ٹھائیں'۔

سپرنٹنڈنٹ پولیس یامونا پرساد کے مطابق آپریشن کے دوران ایک سب انسپکٹر کی پستول نے کام نہیں کیا، جسے ویڈیو میں منہ سے ہی 'ٹھائیں ٹھائیں' کرتے سنا جاسکتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ سب انسپکٹر نے یہ سب جاری آپریشن کو سپورٹ کرنے کے لیے کیا، کیونکہ اس کی پستول کام نہیں کر رہی تھی۔

دوسری جانب ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل آف پولیس (لاء اینڈ آرڈر) آنند کمار کا کہنا ہے کہ ہتھیار کا تکنیکی معائنہ کروایا جائے گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *