صدر مملکت اور گورنر سندھ بھی وزیراعظم کے ’یوٹرن‘ کے بیان کے دفاع میں بول پڑے

لاہور: ایک ایسے موقع پر جبکہ وزیراعظم عمران خان کے 'یوٹرن' سے متعلق بیان کی بازگشت ہر طرف سنائی دے رہی ہے، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور گورنر سندھ عمران اسماعیل بھی وزیراعظم کے بیان کے دفاع میں سامنے آگئے ہیں۔

لاہور میں اپنی اہلیہ کے ہمراہ مقامی شاپنگ مال آمد کے موقع پر میڈیا سے گفتگو میں صدر مملکت نے اپنی زندگی میں یوٹرن لینے کا اعتراف بھی کیا۔

انہوں نے کہا کہ 'میں نے زندگی کے کئی مواقع پر یو ٹرن لیا ہے'۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ 'حالات کی مناسبت سے فیصلے کیے جاتے ہیں'۔

شاپنگ مال میں صدر مملکت اور ان کی اہلیہ نے کافی پی اور لوگوں کے ساتھ سیلفیاں بھی بنوائیں۔

اس موقع پر صدر کی اہلیہ کا کہنا تھا کہ میں کسی سیاسی سوال کا جواب نہیں دوں گی۔

گورنر سندھ کا بیان

دوسری جانب گورنر سندھ عمران اسماعیل نے بھی وزیراعظم کے بیان کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کی یوٹرن سے متعلق بات درست ہے۔

انہوں نےکہا کہ جب تک کوئی لیڈر یوٹرن نہیں لیتا بڑے فیصلے نہیں کرسکتا۔

اس موقع پر عمران اسماعیل نے سندھ حکومت کے مشیر مرتضیٰ وہاب کو آڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ مرتضیٰ وہاب میری انگریزی کے پیچھے ہاتھ دھو کر پڑگئے ہیں، انہیں اپنے کام سے کام رکھنا چاہیے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ روز کالم نویسوں سے ملاقات کے دوران کہا تھا کہ حالات کے مطابق جو یوٹرن نہ لے وہ لیڈر ہی نہیں اور جو یو ٹرن لینا نہیں جانتا اس سے بڑا بے وقوف لیڈر نہیں ہوتا، ہٹلر اور نپولین یوٹرن نہ لے کر نقصان میں گئے'۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ 'یوٹرن لینا اسٹریٹجی کا حصہ ہوتا ہے، تاریخ میں بڑے بڑے لوگوں نے یوٹرن لے کر چیزیں بہتر کی ہیں'۔

ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ 'یوٹرن لینے اور جھوٹ بولنے میں فرق ہے، نواز شریف نے عدالت میں یوٹرن نہیں، جھوٹ بولا تھا'۔

وزیراعظم کے اس بیان نے ہر طرف ہلچل مچادی اور اس حوالے سے اپوزیشن رہنماؤں کی جانب سے بھی ردعمل اور بیانات کا سلسلہ جاری ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *