ماریہ شراپووا کا ڈوپ ٹسٹ مثبت، کیا یاسرشاہ کیس مددگارہو گا

IMG_20160308_092150

لاس اینجلس -معروف روسی ٹینس اسٹار اور سابقہ ورلڈ نمبر ون ماریہ شراپووا کا ڈوپ ٹیسٹ مثبت نکل آیا ہے۔ لاس اینجلس میں پریس کانفرنس کے دوران ماریا شیراپووا نے انکشاف کیا ہے کہ آسٹریلین اوپن کے دوران ہونے والے ڈرگ ٹیسٹ میں انھیں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ ماریا نے کہا کہ وہ اس ٹیسٹ میں ناکام رہی اور میں اس کی پوری ذمہ داری لیتی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ گذشتہ دس برس سے اپنے فیملی معالج کی ہدایت کے مطابق ملڈرونیٹ نامی دوا کا استعمال کر رہی ہیں۔ چند ہی روز قبل انہیں انٹرنیشنل ٹینس فیڈریشن کی جانب سے ایک خط موصول ہوا جس سے انہیں پتہ چلا کہ میلڈونیم اس دوا کا ملڈرونیٹ دوسرا نام ہے جو کہ وہ استعمال کرتی ہیں لیکن وہ اس بارے میں  نہیں جانتی تھیں۔ ماریہ شیراپوا کا کہنا تھا کہ یہ سمجھنا ضروری ہے کہ گزشتہ دس برس سے یہ دوا واڈا کی جانب سے ممنوعہ ادویات کی فہرست میں شامل نہیں تھی اوروہ  قانونی طور پر اس دوا کو پچھلے دس سال سے استعمال کر رہی ہیں۔ مگر یکم جنوری کو قوانین بدل گئے، اور میلڈونیم ممنوعہ اشیا میں شامل ہوگئی جو کہ وہ نہیں جانتی تھی۔ انھیں اس غلطی کا حمیازہ بھگتنا پڑے گا تاہم وہ پرامید ہیں کہ انھیں دوسرا موقع دیا جائے گا۔ 28 سالہ ماریہ شرا پووا نے 2005 میں عالمی نمبر ایک کھلاڑی بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا اور اس وقت عالمی رینکنگ میں ساتویں نمبر پر ہیں۔ گزشتہ 11 سال سے سب سے زیادہ کمائی کرنے والی خاتون ایتھلیٹ ہیں۔ صرف ٹینس کےذریعے انھوں نے اب تک دو کروڑ 60 لاکھ پاؤنڈز کمائے ہیں۔ یاسر شاہ کا بھی حال ہی میں آئی سی سی کی طرف سے لیا گیا ڈوپ ٹسٹ مثبت آیا تھا لیکن ان کے اپنی بیوی کی بلڈ پریشر کی دوائی کو انجانے میں استعمال کرنے کی وجہ سے ان کی سزا میں نرمی برتتے ہوئے صرف 3 ماہ کی پابندی کا سامنا کرنا پڑا تھا تو کیا ماریہ شراپووا اس کیس کو سٹڈی کی طور پر استعمال کر کے کسی لمبی سزا سے بچ سکتی ہیں اس کا فیصلہ تو صرف وقت ہی کرے گا :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *