اراکین اسمبلی کا 19 رکنی وفد بھارت پہنچ گیا

Pakistani (L) and Indian flags stand on a table during an Indian-Pakistan meeting on the Sir Creek region in New Delhi on June 18, 2012. Pakistan and India started two-day talks in New Delhi to resolve their maritime boundary dispute in the Sir Creek region. Sir Creek, which opens up into the Arabian Sea dividing the Kutch region of the Indian state of Gujarat with the Sindh province of Pakistan, is a 96-km strip of water that is disputed between India and Pakistan. AFP PHOTO / Prakash SINGH

نئی دہلی -پاکستان کی قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلیوں کے 19ارکان ، سرکاری حکام اور مختلف پاکستانی میڈیا اداروں کے نمائندے بھارت پہنچ گئے ۔جہاں وہ تیسرے پاک بھارت قانون سازوں اور پبلک آفیشلز ڈائیلاگ میں شرکت کرینگے اور جمہوریت اور طرز حکمرانی سے متعلق اپنے تجربات کا تبادلہ کرینگے۔پلڈاٹ نے لوک نیتی (سی ایس ڈی ایس )کے تعاون سے ڈائیلاگ کے اس سلسلے کا اہتمام کیا ہے ۔ 8مارچ کونئی دہلی میں منعقدہ ڈائیلاگ میں پولیس اور میڈیا کے موضوع پر بحث کی جائے گی ۔ 10مارچ کو چندی گڑھ میں زرعی مشقوں ،12مارچ سیاحت اور زرعی مشقتوں کے موضوع پر ڈائیلاگ ہونگے ۔ پاکستانی وفد میں سینیٹر لیفٹیننٹ جنرل (ر)عبدالقیوم ، سینیٹر میر حاصل خان بزنجو، سینیٹر نعمان وزیر ، سینیٹر سعود مجید، ایم این اےز محمد افضل خان ، منزہ حسن ، ڈاکٹر رامیش کمار ،شہریار آفریدی ،مہتاب اکبر راشدی،سپیکر خیبر پختونخوا اسمبلی اسد قیصر،پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الراشد،ایم پی ایزڈاکٹر نجمہ افضل خان شامل ہیں۔صحافیوں کے وفد میں صدرسی پی این ای اورایڈیٹر انچیف روزنامہ پاکستان مجیب الرحمان شامی ،اینکر سلیم صافی اورریذیڈنٹ ایڈیٹر اسلام آبادروزنامہ ڈان عارفہ نور شامل ہیں۔ سابق وفاقی وزیر اطلاعات و ممبر سینٹ فورم برائے پالیسی ریسرچ جاوید جبار،ایم ڈی پاکستان ٹورازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن کبیر احمد خان ،سابق ایس ایس پی محمد علی نیکوکارا، سابق آئی جی پولیس سندھ و بلوچستان محمد شعیب سڈل بھی وفد کا حصہ ہیں۔وفد میں پلڈاٹ کے صدر احمد بلال محبوب، جوائنٹ ڈائریکٹر پلڈاٹ آسیہ ریاض، پراجیکٹس منیجرز فہیم احمد ،محمد سعد اور شاہرہ خان شامل ہیں :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *