حبیب بنک کا ڈیٹا چوری، صارفین پریشانی کا شکار

HBL

کراچی -حبیب بنک لمیٹیڈ (ایچ بی ایل) نے ایک ماہ کو دوران دوسری دفعہ صارفین کے کریڈٹ کارڈز بلاک کردیے ہیں۔  بنک کی طرف سے دیے گئے موقف کے مطابق صارفین کے ڈیبٹ کارڈز سیکورٹی وجوہات پر بلاک کر دیے گئے ہیں، ڈیبٹ کارڈ بلاک ہونے سے متاثر ہونے والے صارفین کی تعداد کا تعین تو نہیں ہو سکا لیکن پہلی مرتبہ ڈیبٹ کارڈز کو فروری 2016 میں بلاک کیا گیا تھا جس کے بعد صارفین کو نئے کارڈ کا اجرا کیا گیا۔ تاہم 7 مارچ کو تجدید ہونے والے کارڈز بھی بلاک نکلے ، اس صورتحال کےپیش نظر (بنک کی جانب سےصارفین کو خود کار نظام کے تحت بلاک ہوجانے والے) کارڈز کی دوبارہ تجدید کروانے کا کہا گیا۔ جس کے بعد صارفین کو ڈیبٹ کارڈ حاصل کرنے کے لیے اضافی چارجز کی ادائیگی کرنی پڑی، متعدد صارفین اپنے بلاک ہونے والے کارڈز کی بحالی کے لیے سالانہ ادائیگی کے علاوہ 348 روپے ادا کر چکے ہیں۔ اس دورانیے میں صارفین نہ صرف ڈیبٹ کارڈ کی سہولت اے ٹی ایم سے محروم رہے بلکہ ڈیبٹ کارڈ بلاک ہو جانے کی صورت میں  وہ  بنک کی پارٹنر کمپنیوں اور دکانوں کی پروموشنل سروسز سے بھی محروم ہو گئے۔ ذرائع کے مطابق حبیب بنک لمیٹیڈ کے ڈیبٹ کارڈز صارفین سے متعلق کچھ معلومات اور ڈیٹا چوری ہو گیا تھا جس کے باعث بنک کو مجبورا ڈیبٹ کارڈز سیکورٹی وجوہات کی بنا پر بلاک کرنا پڑے :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *