ہندوستان میں ریپ کے بعد جلائی گئی لڑکی دم توڑگئی

Rape

نئی دہلی -ہندوستان کے دارالحکومت نئی دہلی کے قریب ریپ کے بعد زندہ جلائی جانے والی 15 سالہ لڑکی زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ گئی. خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) نے ریاست اترپردیش کے پولیس کانسٹیبل یدرام سنگھ کے حوالے سے بتایا کہ مذکورہ لڑکی کا انتقال بدھ کی صبح ہوا. ہندوستانی میڈیا رپورٹس کے مطابق مذکورہ لڑکی دسویں جماعت کی طالبہ تھی، لیکن اُسے اُس وقت اسکول سے اٹھوا لیا گیا، جب ایک 20 سالہ شخص نے اسے پریشان اور ہراساں کرنا شروع کیا اور جس کے بعد مذکورہ لڑکی نے گھر سے باہر نکلنا بھی چھوڑ دیا تھا. لڑکی کے والدین نے پیر کو رات ڈھائی بجے کے قریب نوئیڈا میں واقع اپنے گھر کی بالکونی سے اپنی بیٹی کے چلانے کی آوازیں سنیں اور پھر اسے آگ میں جلتے ہوئے دیکھا. عینی شاہدین کے مطابق 'مذکورہ شخص زبردستی لڑکی کے گھر میں داخل ہوا اور ریپ کے بعد اسے جلا دیا'. پولیس لڑکی کے ریپ اور اسے زندہ جلانے کے الزام میں مذکورہ 20 سالہ شخص کو گرفتار کرکے تفتیش کر رہی ہے.

ہندوستان میں ریپ کے بعد کسی لڑکی کی ہلاکت کا یہ واقعہ نیا نہیں ہے،حالیہ سالوں میں یہاں خواتین اور لڑکیوں کے ساتھ جنسی تشدد کے واقعات میں اضافہ دیکھا جارہا ہے تاہم 2012 میں دہلی میں بس میں سفر کے دوران ایک طالبہ کے ساتھ ہونے والے گینگ ریپ اور بعدازاں دورانِ علاج لڑکی کی ہلاکت نے عالمی توجہ ہندوستان میں خواتین پر بڑھتے ہوئے جنسی تشدد کے واقعات کی جانب مبذول کروائی۔
اس واقعے کے بعد ہندوستان بھر میں احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا اور حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ ریپ میں ملوث ملزمان کو سخت سے سخت سزا دینے کے لیے قانون سازی کی جائے تاہم ان سب کے باوجود ریپ کے واقعات میں کمی نہیں آئی :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *