ٹائی ٹینک کی ہیروئین کیٹ ونسلیٹ نے فلم کے ہیرو کو مارنے کا اعتراف کر لیا

titanic

ہالی وڈ فلم ٹائی ٹینک کی ہیروئن کیٹ ونسلیٹ نے اعتراف کیا ہے کہ 'روز' جو کہ فلم کی ہیروئن کا نام تھا کو چاہیے تھا کہ جس گیٹ پر وہ موجود تھی اس پر فلم کے ہیرو جیک کو بھی بلاتی اور انہیں مرنے سے بچا لیتی لیکن انہوں نے ایسا نہیں کیا۔ یہ ایک عالمگیر سچائی مانی جاتی ہے کہ اگر روز ٹائی ٹینک فلم میں دروازے پر اپنے ساتھی اور محبوب جیک کو ساتھ ے لیتیں تو ان کی جان بچ سکتی تھی۔ اس معاملے میں انہوں نے خود غرضی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پورے دروازے پر قبضہ کیے رکھا اور ہیرو کو مرنے دیا۔

فلم کے اس سین نے دنیا بھر کے ناظرین کو دکھی کر دیا۔ بہت سے لوگوں نے رائے دی کہ فلم کا اختتام اس سے بہتر رکھا جا سکتا تھا۔ ٹائی ٹینک حادثہ کی فلم میں کیٹ ونسلیٹ نے ہیروئن' روز' کا کردار ادا کیا تھا۔ یہ فلم آسکر ایوارڈ جیتنے میں کامیاب ہوئی۔ بیس سال بعد ونسلیٹ نے اعتراف کر لیا کہ انہیں اپنے محبوب کو دروازے پر جگہ دے کر ان کو مرنے سے بچا لینا چاہیے تھا۔ انہوں نے کہاہے کہ اس وقت وہ صورتحال کو صحیح طریقے سے جانچ نہیں پائیں ۔ پیر کی رات وہ ایک ٹی وی شو جمی کمل لائیو میں تشریف لائیں اور 20 سال بعد اس ہیرو کے ساتھ ایک نئی فلم کے لیے اکٹھے کام کرنے پر اظہار خیال کیا۔ٹی وی میزبان نے موقع کو غنیمت جانتے ہوئے پوچھ ہی لیا کہ اس فلم میں انہوں نے کیوں اپنے محبوب کو موت کے منہ میں دھکیلا۔ جواب میں ونسلیٹ نے کہا کہ ہاں مجھ سے غلطی ہوئی۔ جیک کو اس چھوٹے دروازے پر کسی بھی طرح فٹ کیا جا سکتا تھا۔ فلم کے مداح برسوں سے ڈائیریکٹر کو یہ جتانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ فلم کے ہیرو اور ہیروئن دونوں کو بچایا جا سکتا تھا ۔ مداحوں کے مطابق دروازے پر اتنی جگہ تھی کہ دونوں کارڈ گیم بھی کھیل سکتے تھے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *