نکاح کے فتوے کے بعد خواجہ سراؤں کے لیے رشتوں کی لائن لگ گئی

KhawajaSira

لاہور-50مفتیان کرام کی طرف سے خواجہ سراﺅں سے نکاح کے فتویٰ کے بعد خواجہ سراﺅں کا ردعمل بھی آنا شروع ہوگیا ، شی میل ایسوسی ایشن کی صدر الماس بوبی نے اس کی مزید وضاحت مانگی تو ’خواجہ سراءسوسائٹی‘کی رکن صائمہ نے فتوے سے اتفاق کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ اب اُنہیں رشتے کیلئے ٹیلی فون بھی آنا شروع ہوگئے جبکہ فیس بک پر بھی طرح طرح کے سوالات کیے جارہے ہیں ، زیادہ تر لوگ پوچھتے ہیں کہ اب کیا خیال ہے ؟کیا موڈ ہے؟ مناسب رشتہ آیاتوشادی کرناپسند کروں گی ۔  ذرائع سے گفتگوکرتے ہوئے خواجہ سرا صائمہ نے کہاکہ وہ سمجھتی ہیں کہ مفتیان کرام نے کہہ دیاتو وہ غلط نہیں ہوگا کیونکہ اُنہی کے کہنے پر روزے رکھتے ہیں اور چاند وغیرہ کے معاملات کو بھی مانتے ہیں ، کوئی بھی تہوار ہوتو حتمی فیصلہ مفتیان کرام کا ہی مانا جاتاہے ، اب خواجہ سراﺅں کو بھی عام مردسے شادی کرلیناچاہیے ، فتویٰ آنے کے بعد کام شروع ہوگیا ہے۔ کراچی ، لاہور اور پشاور سے فیس بک اور ٹیلی فون پر رابطے کیے گئے ، لوگ کہتے تھے کہ اب کیا خیال ہے؟ میرے شوہر میں بھی وہی خوبیاں ہونی چاہیں جو عام عورت چاہتی ہے ، وہ خیال رکھے اور سہولیات دے تاکہ باہر نظرنہ آئیں ، عزت کیساتھ گھر بیٹھیں ، وہ خود بھی مرد کی ہربات مانیں گی اور اس کی ہی ہاں میں ہاں ملائیں گی ، کمیونٹی کے اندازہ 75فیصد لوگوں کی یہی رائے ہوگی اور وہ شادی کرناچاہیں گے :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *