جمہوریت کا تختہ الٹنے والوں کا اپنا تختہ الٹ گیا

منیر فاطمی

tank

 دنیا میں جب کہیں بھی کسی منتخب حکومت پر فوج کشی ہوتی ہے وہاں کے عوام عموما" خوفزدہ ہوکر گھروں میں بیٹھ جاتے ہیں لیکن ترکی کے عوام نے پہلی بار ایک ایسی تاریخ رقم کی ہے جس نے جمہوریت پسندوں کو نیا حوصلہ عطا کر دیا ہے ، کل رات جب فوج کے باغی ٹینکوں اور ہتھیاروں سے لیس ہوکر منتخب حکومت کے خلاف سڑکوں پر نکلے تو ترکی کی عوام نے اپنے منتخب نمائندوں کے تحفظ کے لیے گھروں کو خیر آباد کہا اور پورے عزم کے ساتھ سڑکوں پر نکل کر فوجی ٹینکوں پر چڑھ گئے -یہ منظر دنیا بھر میں نہایت حیرت سے دیکھا گیا اور پھر دیکھتے ہی دیکھتے منختب حکومت نے عوام کی مدد سے فوجی باغیوں کو عبرتناک شکست سے دوچار کردیا- اس صورتحال نے ثابت کر دیا کہ اگر عوام جمہوریت کے ساتھ ہوں تو پھر دنیا کی کوئی طاقت ان کے ملک پر غاصبانہ قبضہ نہیں کر سکتی- ترکی کے واقعے نے ثابت کر دیا ہے کہ  اب دنیا 'مارشل لاوںِ، کے خوف سے آزاد ہوچکی ہے اور لوگ ووٹ کی طاقت سے آگاہ ہوچکے ہیں- ترکی میں فوج کشی کی بظاہر وجہ یہ تراشی گئی تھی کہ حکومت ٹھیک سے کام نہیں کر رہی لیکن ترک عوام نے اس تاثر کو یکسر زائل کرتے ہوئے حکومت کا ساتھ دیا اور باغی فوجیوں کو باور کرا دیا کہ اب ان کی راتوں رات حکومت کا تختہ الٹنے کی سازش کبھی ناکام نہیں ہوسکتی- اس واقعے نے جہاں ترکی می جمہوریت کو مضبوط کیا ہے وہیں فوج کشی کے شوقین افراد کو یہ واضح پیغام بھی دیا ہے کہ اب دنیا بدل چکی ہے ، لوگ اپنے حقوق سے آگاہ ہیں اور اب وہ کسی بھی ایسی غیر آئینی حرکت کا جواب دینے کے لیے ذہنی طور پر تیار ہیں- ترکی میں فوجی بغاوت کی ناکامی نے جمہوریت کو نئی زندگی عطا کی ہے ، یہی وجہ ہے کہ آج پوری دنیا ترک عوام کی بہادی کی داد دے رہی ہے، دنیا کی تاریخ بدل گئی ہے ، ریاست کے طاقتور ہونے کا تاثر مضبوط ہوا ہے اور تختہ الٹنے کی خواہش رکھنے والوں کی امیدوں پر پانی پھر گیا ہے -

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *