فرقہ واریت اور دہشت گردی

فرقہ واریت اور دہشت گردی کا باہمی تعلق وہی ہے جو والدین اور اولاد کا ہے۔ قومی ایکشن پلان تنازعات کی زد میں ہے۔ ابھی تک بنیادی امور ہی طے نہیں ہو سکے۔ اس کی بڑی وجہ وہ ابہام ہے جو مذہب، مذہبی اداروں اوردہشت گردی کے باب میں ریاست…

لاپتہ افراد کا قصہ

جنگل کا معاملہ دوسرا ہے۔ ایک مہذب معاشرے میں افراد دن دہاڑے گم ہونے لگیں تو یہ پوری قوم کے لیے تشویش کی بات ہونی چاہیے۔کیا یہ بھی کوئی ایسا مسئلہ ہے جس میں ایک سے زیادہ آراء ہو سکتی ہیں؟ داد دیجیے اس معاشرے کو کہ اس مسئلے میں…

پیپلزپارٹی: تنظیم نو یا تشکیلِ نو؟

پیپلزپارٹی کو آج تنظیم ِنو سے زیادہ تشکیلِ نوکی ضرورت ہے۔ ایک اچھی خبر یہ ہے کہ بلاول بھٹونے ترقی پسند خیالات رکھنے والے اہلِ علم و دانش سے ملاقات کی ہے۔ پروفیسر فتح محمد ملک، ڈاکٹررسول بخش رئیس اور کچھ اور۔ یہ کام انہیں بہت پہلے کرنا چاہیے تھا۔…

2017ء کا ایجنڈا

کیسا ہوگا؟2017 اس سوال پر غورکا ایک زاویہ ہمارا ہے اور ایک ان کا جنہیں ہم اغیار کہتے ہیں۔ وہی جو آج دنیا کے حاکم ہیں۔ جن کے بارے میں ہمارا خیال ہے کہ ہم سے خوف زدہ اور ہماری تاک میں رہتے ہیں۔ ایک ایجنڈا ان کا ہے اور…

پیغمبر اور اُمتی

امت کا اپنے پیغمبر سے زندہ تعلق کیسے قائم ہو؟ مذہب کے پس منظر میں جب ایک امت وجود میں آتی ہے تو اس کامرکز و محور پیغمبر ہوتا ہے۔ پیغمبر سے امت کی تاسیس ہوتی ہے۔ ہر مذہب کے ماننے والے اپنے پیغمبر سے منسوب ہوتے ہیں۔ الہامی روایت…

جمہوریت کے آداب

جمہوریت کیا ہے؟ یہ ایک تصورِ زندگی ہے جو اختلاف کے ساتھ جینے کے آداب سکھاتا ہے۔ جمہوریت ایک نظامِ حکومت ہے جس میں حکمرانی کا حق عوام کے پاس ہے۔ جمہوریت ایک عمل ہے جو زینہ زینہ اپنا سفر طے کرتا ہے۔ یہ سب باتیں پیش نظر نہ ہوں…

خواجہ سرا اور مذہب

30 دسمبر کو ایک قومی ا خبار کے مذہبی ایڈیشن میں ایک سوال شائع ہوا: ''ہیجڑے یعنی خواجہ سرا کو غسل دینے کا شرعاً کیا حکم ہے؟ اگر ایک ہیجڑا بڑی عمر کا ہو تو اس کے مرنے کے بعد اسے غسل دیا جائے گا یا نہیں؟‘‘ ملک کے ایک…

عالمی تصادم کی مذہبی تعبیرات

حیرت ہوتی ہے کہ لوگ فکری تضادات کے ساتھ کیسے نباہ کرلیتے ہیں؟ لکھنے والے بھی اور پڑھنے والے بھی۔ لوگ پیش گوئیوں کی بنیاد پر ایک بیانیہ ترتیب دیتے ہیں مگر ان پیش گوئیوںکو نظر انداز کرتے ہیں جو یقینی ذرائع سے ہم تک پہنچیں اور ان کو قبول…

سالِ رفتہ کا ماتم

آج 2016ء کا آخری دن ہے۔ گزشتہ دنوں پر نگاہ ڈالتا ہوں تو خیال ہوتا ہے کہ وقت جیسے تھم سا گیا ہو۔ جو رونا سال کے آغاز میں تھا، وہی اختتام پر بھی ہے۔ دکھ یہ ہے کہ احساسِ زیاں بھی نہیں۔ میں ٹی وی دیکھنے سے گریز کرتا…

ایک کتاب کی رونمائی

ملاقاتیں کیا کیا؟‘‘ کی پزیرائی کا سلسلہ جاری ہے۔ اس بار اس کا اہتمام اسلام آباد میں ہوا۔ علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کے آڈیٹوریم میں اہلِ علم کی بڑی تعداد جمع تھی۔ جامعات میں ایسی تقریبات کا ایک فائدہ یہ بھی ہے کہ پڑھے لکھے سامعین میسر ہوتے ہیں۔ یہ…