نئے آرمی چیف صاحب کے نام کھلا خط

میرے عزیز ہم وطن جناب چیف آف آرمی سٹاف السلام علیکم آپ  کو سپہ سالار بننے پر مبارکباد  ۔  اب جب  کہ آپ  کے آرمی چیف  منتخب ہوتے ہی  کچھ  لوگ راحیل شریف صاحب  پر تبرے بھیجنا اور اور آپ کے شان میں  قصیدے لکھنا شروع کرچکے ہیں-  یہ سلسلہ…

محبت کی شادی اور جمہوریت

ہمارے یہاں جمہوریت کے خلاف ایسے ہی دلائل دئے جاتے ہیں جیسے کہ محبت کی شادی کے خلاف دئے جاتے ہیں کہ نوجوان ناسمجھ ہیں، اپنا برا بھلا نہیں جانتے- کیا پتہ  کب جوانی کے گھوڑے پر سوار ، محبت کے نشے میں یہ حقائق کی کھائی میں جا گریں …

وصال ِ یار فقط آرزو کی بات نہیں

کون اپنی آنکھوں میں خواب نہیں سجاتا، کس دل میں آرزوئیں نہیں۔ کسے عروج کی خواہش نہیں ؟کس کا دل چاہتا ہے کہ کامیابی اس کے قدم نہ چومے؟- وصال یار کی آرزو تو ہر کوئی کرتا ہے لیکن وصالِ یار فقط آرزو کی بات نہیں-اسی طرح ہر قوم انصاف،…

بلی کے گلے میں گھنٹی

ایک جمہوری معاشرے میں آزاد عدلیہ کے کردار کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا-یہ   عدلیہ ہی ہے  جو آئین ،قانون  اور بنیادی حقوق کی محافظ ہے -یوں تو ہر سیاستدان، ہر رکنِ قومی و صوبائی اسمبلی، ہر سینیٹر ، وزیراعظم اور  کابینہ کے ارکان،ہر سرکاری ملازم، تجزیہ کار اپنے فرائض…

ووٹ کا حق اور جان نثاری حملے

یوں تو دنیا ، تعلیم کے کئی مصرف  اور مقاصد دریافت کر چکی ہے   لیکن وطن عزیز میں پڑھے لکھے طبقے نےاس کا ایک ایسا استعمال دریافت کر لیا ہے جو کسی اور ملک کے باشندوں کے وہم و گمان میں بھی کبھی نہیں آیا ہوگا-  ہم کہنے کو تو…

کمالیت پرستی اور اس کے مضمرات

ہماری بیشترقومی الجھنوں کی وجہ کمالیت پرستی یا پرفیکشنزم ہے- اگر کوئی شخص کسی کام میں پرفیکشن کے علاوہ کسی بھی قسم کے نتیجے کو قبول کرنے سے انکار کر دے تو اسے کمالیت پرست یا پرفیکشنسٹ کہتے ہیں- ایسے لوگ اپنے لئے ایسے اہداف مقرر کر لیتے ہیں جن…

اے کشتۂ سلطانیِ و ملائیِ و پیری

خدا تعالیٰ نے انسان کی فطرت میں اپنی پرستش کابہت طاقتور   جذبہ رکھاہے- اسی جذبے کے تحت   انسان ہمہ وقت کسی ایسی ما فوق الفطرت  ہستی کی تلاش میں رہتا ہے جس کی وہ پوجا کر سکے – جس کے آگے سر بہ سجود ہو- جس کے سامنے اپنے دکھ…

حقِ احتجاج اور اس کی حدود

جمہوری معاشرے میں پر امن ذرائع سے حقِ احتجاج ایک ثابت شدہ امر ہے- معاشرے کے ارتقاء کے لیے اس کی اہمیت سے انکار ناممکن ہے- اگر احتجاج کا حق نہ دیا جائے تو اس کا مطلب ہے کہ معاشرہ اصلاح پر آمادہ نہیں ہیں اور اربابِ سیاست نے ایک…

بادشاہت یا جمہوریت

قاضیَ القضاۃ نے بھی کیا خوب فرمایا کہ یہ جمہوریت نہیں بلکہ جمہوریت کے نام پر بادشاہت ہے- عدالت نے یہ جملہِ معترضہ لاہور ٹرین منصوبے میں ارشاد فرمایا- یوں تو میرے جیسے قانون کے ادنا طالب علم کے لئے اس بے وقت کی راگنی بلکہ سماع خراشی پر تنقید…