افغانستان سے مولوی فضل اللہ کی حوالگی کا مطالبہ

-پاکستان نے افغانستان سے ایک بار پھر کالعدم تحریک طالبان(ٹی ٹی پی) کے سربراہ ملوی فضل اللہ کو حوالے کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔
صحافیوں سے گفتگو میں وزیر اعظم کے مشیر برائے خارجہ سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ افغان حکومت کے ساتھ مولوی فضل اللہ کی حوالگی کے لیے دوبارہ معاملہ اٹھا جائے گا، افغان سرزمین سے پاکستان پر ہونے والے حملے نہایت اہم معاملہ ہے اس پر اعلیٰ افغان حکام سے رابطے میں ہیں تاکہ سرحد پر معاملات کو درست کیا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ سرحد پر بائیو میٹرک سسٹم کی تنصیب سے معاملات مزید موثر ہونے کے امکانات ہیں۔سرتاج عزیز کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان اپنے سرحدوں کی حفاظت کرنا جانتا ہے اور سرحد پار سے ہونے والی کسی بھی کارروائی کا بھر پور جواب دیا جائے گا، دہشت گردی پاکستان اور افغانستان کا مشترکہ معاملہ ہے دونوں ممالک کو اس کے تدارک کے لیے مل کر اقدامات کرنے ہوں گے۔
ہندوستان سے مذاکرات کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے خارجہ سیکریٹریز کی ملاقات 25 اگست کو طے ہے۔ملکی کی داخلی صورتحال پر ہونے والے سوال پر انہوں نے کہا کہ جمہوری نظام کو پاکستان تحریک انصاف(پی ٹی آئی) اور پاکستان عوامی تحریک (پی اے ٹی) کی جانب سے اسلام آباد میں نکالے جانے والے لانگ مارچز سے خطرہ ہے۔
سرتاج عزیز نے کہا کہ فلسطین کی صورتحال پر او آئی سی کی ایگزیکٹیو کمیٹی کا ہنگامی اجلاس 12اگست کو طلب کرلیا گیا ہے، او آئی سی کی ایگزیکٹیو کمیٹی کا اجلاس جدہ میں ہوگا۔انہوں نے مزید کہا کہ او آئی سی کی ایگزیکٹیو کمیٹی کا اجلاس جدہ میں ہوگا، پرنس سعود الفیصل اجلاس کی صدارت کریں گے، وزیراعظم کی ہدایت پر او آئی سی کی ایگزیکٹیو کمیٹی کے اجلاس میں میں شرکت کروں گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *