عمران خان کو توہین عدالت کا نوٹس، 2اگست کوسپریم کورٹ میں طلبی

Imran

چیف جسٹس افتخار محمد چودھری نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے کل 2 اگست کو طلب کر لیا ۔ یاد رہے عمران خان نے 26 جولائی کو اپنی تقریر میں عدلیہ اور الیکشن کمیشن پر مختلف الزامات لگائے تھے ، عدالت نے رجسٹرار سپریم کورٹ کے نوٹ پر عمران خان کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ 26 جولائی کو اپنی تقریر میں عمران خان نے کہا تھا کہ حالیہ الیکشن میں عدلیہ اورالیکشن کمیشن کا کردار شرمناک ہے ، دونوں اداروں کے کردار کی وجہ سے الیکشن میں دھاندلی کی گئی، عمران خان نے مزید کہا تھا کہ وہ اس امر کو یقینی بنائیں گے کہ مستقبل میں اس طرح کے شرمناک الیکشن نہ ہوں اور تحریک انصاف نے الیکشن قبول کئے ہیں مگر الیکشن میں دھاندلی قبول نہیں کی۔ 29 جولائی کو انہوں نے عدلیہ پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے الزام لگایا کہ حالیہ الیکشن میں ہونے والی دھاندلی میں عدلیہ کا ہاتھ تھا اور عدالتی افسران بطور ریٹرننگ افسران الیکشن میں متنازعہ ہی رہے اور عدلیہ کے دوہرے کردار کی وجہ سے تحریک انصاف کے امیدواروں کو ٹیکنیکل بنیادوں پر ناک آئوٹ کیا گیا۔ عدالت کے مطابق تحریک انصاف کے چیئرمین نے عدلیہ کیخلاف توہین آمیز کلمات ادا کئے ، بادی النظر میں انہوں نے عدلیہ کو سکینڈلائز کرنے کی کوشش کی تھی، اس کیخلاف نفرت پھیلائی، اس نے عدلیہ کی تضحیک کی جو بظاہر توہین عدالت کے مترادف ہے ۔ کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ کرے گا، عدالت نے کیس کی سماعت کے حوالے سے اٹارنی جنرل منیر اے ملک کو بھی نوٹس جاری کر دیئے

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *