عمران خان کو اٹھائیس اگست تک مہلت

سپریم کورٹ نے تحریکِ انصاف کے سربراہ کے جواب کو مسترد کرتے ہوئے اُنہیں اٹھائیس اگست تک کی مہلت دی ہے کہ وہ اپنا تفصیلی وضاحت داخل کرائیں۔ اس سے پہلے عمران خان نے سپریم کورٹ کو بتایا تھاکہ اُنھوں نے چھبیس جولائی کے بیان میں سپریم کورٹ یا چیف جسٹس آف پاکستان پرتنقید نہیں تھی بلکہ اُنھوں نے صرف ریٹرننگ آفیسرimranز، جنھوں نے گزشتہ انتخابات کی نگرانی کی تھی، کے رویے پرنکتہ چینی کی تھی۔ عدالت نے عمران کی وضاحت کو مسترد کرتے ہوئے اُنہیں آج ساڑھے گیارہ بجے تک نظرِ ثانی شدہ جواب دائرکرنے کی ہدایت کی تھی۔ تاہم آج عمران خان تین رکنی بنچ ، جس کی سربراہی چیف جسٹس آف پاکستان کررہے تھے، کے سامنے پیش ہوئے۔ ان کے وکیل حامد خاں کی طرف سے پیش کردہ جواب کو فاضل عدالت نے ’’مایوس کن ‘‘ قرار دیتے ہوئے تحریکِ انصاف کے سربراہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ اٹھائیس اگست تک اس ضمن میں عدالت کو مطمئن کریں۔ دوسری طرف عمران کا کہنا ہے کہ وہ معافی نہیں مانگیں گے بلکہ پاکستان میں حقیقی جمہوریت کے لیے ہر مشکل برداشت کریں گے۔ عدالت کے باہر تحریکِ انصاف کے کارکنوں کی ایک بڑی تعداد بھی جمع تھی۔ اُنھوں نے اپنے قائد کے حق میں نعرے بازی کی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *