اَ سٹریلوی وزیرِ اعظم ڈی آر ایس سے ناخوش

حالیہ ایشز سیرسز میاسٹریلیا دو میچ ہارنے کے بعد اولڈ ٹریفولڈ kevin Ruddمیں اپنے حریف انگلینڈ کے ساتھ پنجہ آزما ہے، ڈی آر ایس(فیلڈ امپائر کے فیصلے پر نظرِ ثانی کرنے والا نظام)کی طرف سے کیے گئے فیصلے متنازعہ ہوتے جارہے ہیں۔ کھلاڑیوں کے بعد سیاست دان بھی اس میدان میں ا تر آئے ہیں۔ اس وقت اسٹریلیا کے وزیرِ اعظم مسٹر کیون رڈ نے اسٹریلیا کے کھلاڑی عثمان خواجہ کو آؤٹ دیے جانے کے فیصلے کو بدترین قرار دیا ہے۔

کھیل کے دوسرے دن مائیکل کلارک کی شاندار اننگز 125 رنز ناٹ آؤٹ کی بدولت مہمان ٹیم کا سکور تین وکٹوں کے نقصان پر 303 تک پہنچ چکا ہے لیکن عثما ن خواجہ کے خلاف دیے جانے والے متنازعہ فیصلے نے کھیل کا مزہ کرکرا کر دیا ہے۔ خواجہ کو فیلڈ امپائر ٹونی ہل نے اُس وقت آؤٹ قرار دیا جب اس نے اپنے انفرادی ایک کے سکور پر انگلش سپنر گریم سوان کی ایک گیند کو کھیلنے کی کوشش کی ۔ امپائر کا خیال تھا کہ گیند بلے کا کنارہ لے کر وکٹ کیپر میٹ پرائر کے گلوز میں گئی ہے۔
خواجہ نے فوراً ہی اس فیصلے کو چیلنج کیا۔ تیسرے امپائر کمار دھرما سینا نے ٹونی ہل کے فیصلے کو برقرار رکھا اگرچہ ھاٹ سپاٹ ظاہر نہیں کرتا تھا کہ گیند نے بلے کو چھوا ہے، تاہم سری لنکا سے تعلق رکھنے والے امپائر کمار دھرما سینا کا خیال تھا کہ گیند کے بلے کو چھونے سے پیدا ہونے والی آواز سنی گئی ہے۔
سوشل میڈیا پر اس فیصلے کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ اس سے ایک بات سامنے آرہی ہے کہ ٹیکنالوجی کے استعما ل کے باوجود کرکٹ کے میدان تنازعات سے پوری طرح پاک نہیں ہوئے ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *